dr shabaz gill

ترجمان پنجاب حکومت کا اچانک استعفیٰ ، سوالات تو اٹھیں گے کیوں؟

EjazNews

وزیراعلیٰ پنجاب کے ترجمان شہباز گل نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے ۔ جس کی وجوہات تو انہوں نے نہیں بتائیں کہ اتنے اہم عہدے سے بغیر وجہ سے کبھی کوئی استعفیٰ نہیں دیتا۔ اب وجوہات جاننے کی کوشش تو کی جائے لیکن۔ شہباز گل نے اپنے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ
’’میرے استعفیٰ کی وجوہات بارے طرح طرح کی چہ مگوئیاں اور پراپیگنڈا جاری ہے،دوستوں سے گزارش ہے کہ افواہوں پر دھیان نہ دیں، میں نے اپنی پارٹی اور لیڈرشپ کیخلاف کوئی بیان نہیں دیا، میں پہلے بھی اپنے لیڈر اور پارٹی ڈسپلن کا پابند تھا،اب بھی ہوں!۔مجھے اپنے لیڈر عمران خان پر فخر ہے جو انشاءاللہ ملک کو مسائل کی دلدل سے نکالیں گے۔پاکستان میں مثبت تبدیلی کیلئے پہلے بھی خان کا سپاہی تھا اور اب بھی ہوں!۔وطن عزیز کی خدمت کیلئے مجھے کسی عہدے کی ضرورت نہیں!پاکستان زندہ باد!۔‘‘

یہ ان کے ٹویٹ کے الفاظ ہیں اور جہاں تک مجھے یاد ہے میں جب سے صحافت سے منسلک ہوا ہوں جتنے لوگوں نے اپنے عہدوں سے استعفیٰ دیا ہوتا ہے یا ان سے لیا جاتا ہے تو الفاظ کم و بیش ایسے ہی ہوتے ہیں۔
شہباز گل صاحب سوشل میڈیا اور دوسرے میڈیا پر کافی متحرک نظر آتے تھے ۔کچھ حلقوں کا کہنا ہے کہ وہ جتنا زیادہ متحرک ہو رہے تھے وہ پنجاب حکومت سے زیادہ اپنی شخصیت کو نمایاں کر رہے تھے۔ یہ ایک حلقے کا خیال ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  پروڈکشن آرڈر پرآئے موصوف نے دبے الفاظ میں این آر او مانگا: معاون خصوصی اطلاعات
شہباز گل کا استعفیٰ


اب ایک ایسا موقع جب وزیراعظم عمران خان مظفر آباد میں جلسے سے خطاب کر رہے تھے اور یہ جلسہ انتہائی اہمیت کا حامل تھا ایسے موقع پر اتنے اہم عہدے پر تعینات شخص اگر استعفیٰ دیتا ہے تو اس کا بھی کچھ نہ کچھ مطلب ہوگا کیونکہ ان کے استعفیٰ کے بعد میڈیا کو مظفر آباد کے جلسہ کے ساتھ ساتھ پنجاب میں ہونے والی تبدیلیوں کی طرف بھی توجہ مبذول کرنی پڑی ، اگر ان کے استعفیٰ کو ایک دن بعد منظر عام پر لایا جاتا تو شاید میڈیا کا مکمل دھیان صرف اورصرف اس اہم جلسے کی جانب رہتا اور اس کو اور بھی اچھی طرح کوریج ملتی۔ سوشل میڈیا میں ٹرینڈ نہ بنتے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں