Family Doctor

فیملی ڈاکٹر کا انتخاب کیوں ضروری ہے؟

EjazNews

آپ کا ڈاکٹر ایک ایسا شخص ہونا چاہیے جس سے آپ مانوس ہوں، جس کو آپ کے مسائل سے دلچسپی ہو اور جو اس بات کو پسند کرتا ہو اور ہمت افزائی کرتا ہو کہ آپ اپنی صحت اور اس سے متعلقہ معاملات سے اس کو باخبر رکھیں۔ وہ نہ صرف آپ سے واقف ہو بلکہ دیگر اہل خاندان سے شناسائی رکھتا ہو اور اسے آپ کے خاندانی پس منظر سے بھی آگاہی ہو ۔اس ضمن میں اسے معلومات یا تو آپ نے فراہم کی ہوں یا وہ پہلے ہی سے یہ سب کچھ جانتا ہو ،اس کو آپ کی قدیم بیماریوں کا بھی علم ہو اور آپ کی آئندہ مصروفیات زندگی کی بھی خبر ہو۔ باالفاظ دیگر وہ آپ سے انسانی سطح پر واقف ہو نہ کہ صرف ایک مریض کی حیثیت میں آپ کو جانتا ہو کیونکہ صرف اس طرح کی واقفیت کے بعد آپ کو آپ کے طرز زندگی کے متعلق مشورے دے سکتا ہے اور آپ کے مسائل صحت کی اصلاح کر سکتا ہے، ڈاکٹر کی عمومی طبی صلاحیت بھی مستند ہونی چاہیے تاکہ وہ آپ کی صحیح تشخیص کر سکے اور اگر ضروری سمجھے تو اپنے سے ماہر کے پاس بھیج سکے۔ دراصل ڈاکٹر میں تین خصوصیات ضروری ہیں۔ اول تعلیم و تربیت ، دوم کردار اور سوم مریض سے دلچسپی و ہمدردی۔
فیملی ڈاکٹر کے انتخاب کے ضمن میں اس کی مہارت تو از بس ضروری ہے تاکہ وہ مرض کی صحیح تشخیص کرے اور صحیح علاج تجویز کرے ۔اس کو اسباب امراض اور ان کے روکنے کے طریقوں کا بھی علم ہونا چاہیے۔ اس کا کردار مثالی ہو تاکہ وہ اپنے مریضوں کی صحت و تندرستی کو اولین ترجیح دے سکے۔ ساتھ میں اسے معتدل مزاج اور سنجیدہ عادات کا حامل ہونا چاہیے۔ اسے اپنی فیس (اجرت) سے زیادہ آپ کی خیر و عافیت میں دلچسپی ہونی چاہیے، اسے اس قدر ایماندار ہونا چاہیے کہ جب وہ یہ محسوس کرے کہ اس مرض کے ضمن میں ماہر خصوصی کے مشورہ کی ضرورت ہے تو وہ آپ کو کسی ماہر کے پاس ضرور بھیج دے ۔آپ میں ڈاکٹر کی ذاتی توجہ و دلچسپی کی صلاحیت کا انحصار ڈاکٹر کے اپنے مزاج و شخصیت پر بھی ہے۔ یہ نہایت ضروری امر ہے کہ اس کا رویہ ایسا ہو کہ آپکی صحت کے ضمن میں وقتا فوقتاً مشورہ اور رابطہ کے لیے آپ کی حوصلہ افزائی کرے، اس سے بآسانی بات ہو سکتی ہو اور وہ صبر و اطمینان سے آپ کی بات سنے۔ آپ کو آپ کی صحت کی موجودہ کیفیت کے متعلق محتاط طریقہ سے مطلع کرے ،اس کے پاس بافراغت وقت ہو تاکہ وہ آپ کے تمام سوالات کا جواب دے سکے۔ جو معائنے ضروری ہوں وہ کرے اور وہ باتیں بتائے جو صحت برقرار رکھنے اور گمشدہ صحت کی بحالی کے لیے ضروری ہوں، ایک عام آدمی کو ڈاکٹر کے متعلق یہ اندازہ لگانے کے لیے کہ وہ پیشہ وارانہ لحاظ سے جامع قابل اعتماد ہے اور اپنا کام جانتا ہے۔ مندرجہ ذیل شہادت مفید ہے۔ اول یہ کہ پہلی ملاقات پر وہ اس کی مفصل روداد سنتا ہے اور مریض سے اس کی ولادت سے بلکہ قبل از وقت ولادت تمام واقعات معلوم کرتا ہے اور ان واقعات کا موجودہ صحت و تندرستی سے تعلق معلوم کرتا ہے، پھر ان سب معلومات کو ایک دستاویز کی شکل میں اپنے دفتر میں رکھتا ہے۔ دوم یہ کہ ابتدائی ملاقات میں ہی وہ تفصیلی معائنہ کرتا ہے اور بعد میں جب بھی ضرورت ہو ضروری معائنہ کر لیتا ہے، ان تفصیلی معائنوں میں جسم کے تمام اعضا کا معائنہ اور آزمائش گاہ میں متعلقہ امتحانات (جانچیں) شامل ہیں۔
ایک تجربہ کار اور صادق طبیب صرف مریض کی ان شکایات پر ہی اپنے علاج کی بنیاد نہیں رکھتا جو مریض اسے سناتا ہے، بلکہ وہ اصل مرض کی تشخیص کے لیے اپنی سی پوری سعی کرتا ہے اور مرض کا سبب معلوم کرنے کے بعد اس کے ازالہ کی کوشش کرتا ہے ۔اس کا مطلب یہ ہے کہ تجویز و علاج سے قبل تشخیص مرض ضروری ہے ،اپنے لیے ڈاکٹر کا انتخاب کرنے سے قبل درج ذیل نکات پر توجہ دیں۔ (۱) اپنے محلہ یا علاقہ میں جو شفاخانہ اچھی شہرت و معیار کا ہو وہاں کے ایک ڈاکٹر سے رابطہ قائم کریں۔ (۲) اس ڈاکٹر کے متعلق اپنے محلے کے افراد سے معلوم کریں پھر اس ڈاکٹرسے گفتگو کر کے اس کی تعلیم و تربیت کے متعلق معلومات حاصل کریں۔ (۳) آپ کے علاقہ میں جو طبی انجمن یا طبی ڈائریکٹری (فہرست اطبا) ہو اس سے ڈاکٹر کی پیشہ وارانہ اہلیت اور تعلیمی قابلیت کے متعلق اپنا اطمینان کر لیں پھر اگر وہ مزاجاً آپ سے مطابقت رکھتا ہو تو اسے منتخب کریں۔ آخر میں اس منتخب ڈاکٹر سے یہ معلوم کریں کہ رات کو ہنگامی ضرورت کے وقت کیا طریقہ کار اختیار کیا جائے کیا وہ آ سکتا ہے یا کوئی متبادل انتظام ہے یا اس وقت اس کے پسندیدہ شفاخانہ جایا جائے۔ اس کا معاوضہ خدمت کیا ہو گا اور اس کا تعلق کس شفاخانہ سے ہے۔ آپ اس کو یہ بھی بتلا دیں کہ آپ صحت مند و تندرست رہنا چاہتے ہیں اور یہ نہیں چاہتے کہ مریض ہونے کے بعد علاج کرائیں یہ بات نہایت ضروری ہے کہ جب ایک مرتبہ آپ ڈاکٹر کو منتخب کر لیں تو اس پر اعتماد کریں اور جو وہ کہے اس پر عمل کریں اور اس کے مشوروں کو اہمیت دیں۔

یہ بھی پڑھیں:  گرمی سے بچاؤکیسے ممکن ہے؟
کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں