pension

پینشن کا ٹائم بم

EjazNews

اقتصادی ماہرین دنیا کی 8بڑی معیشتوں کو پینشن کے ٹائم بم سے آگاہ کر رہے ہیں ۔ پینشن ایسا ٹائم بم ہے جو کسی بھی وقت پھٹ سکتا ہے اور کسی بھی وقت دنیا کی 8بڑی معیشتیں اس بم سے برباد ہو جائیں گی۔ ایک اہم رپورٹ کے مطابق 8بڑی معیشتوں پر پینشن کی ادائیگی کا حجم 4سو کھرب ہو جائے گا اور یہ موجودہ عالمی جی ڈی پی کے 5گنا کے برابر ہے۔ رپورٹ کا عنوان ہے۔” اگر ہم سو سال زندہ رہے تو افورڈ کیسے کریں گے“۔ لوگوں کو پینشن کی ادائیگی کے لیے ہر ملک کو اربوں ڈالر کی ضرورت ہوگی۔ رپورٹ کے مطابق امریکہ میں بچتوں کا تناسب کئی ممالک سے کم ہے۔ اس وقت 28کھرب روپے کا خسارہ ہے جو 2050ءتک 137کھرب روپے ہو جائے گا۔ برطانیہ ، جاپان، دی نیدر لینڈ، کینیڈا، آسٹریلیا، انڈیا اور چین میں بھی یہ خسارہ بڑھتا جائے گا۔ ماہرین نے برطانیہ میں پینشن کا فرق 2050ءمیں 25کھرب بتایا ہے تاہم یہ وقت پہلے بھی آسکتا ہے۔لمبی عمر اور موسمیاتی تبدیلیوں سے بھی ریاستوں پر مالی بوجھ بڑھ رہا ہے۔
یہی وجہ ہے کہ لمبی عمروں والے ممالک میں ریٹائرمنٹ کی عمر میں اضافے پر شدید دباﺅ ڈالا جارہا ہے۔ اقتصادی ماہرین نے ریٹائرمنٹ کی عمر 2050ءتک 70برس کرنے کی تجویز دی ہے۔ کیونکہ 2050ءمیں مجموعی عمر سو برس تو ہوگی۔ پینشن کی ادائیگی کے لیے مالیاتی ڈھانچے کو مضبوط ، بچتوں کو بہتر اور مالیاتی وسائل کے استعمال کی اہلیت کو عام کرنا ہوگا۔ بلکہ یہ سکولوں کے نصاب کا حصہ بنانے پر بھی غور ہو رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  نئی دہلی کی امیر طبقہ کی خواتین نے مندروں کی بجائے ’’گرووں‘‘ کا رخ کرلیا

اپنا تبصرہ بھیجیں