paln crash

ایوی ایشن کا طیارہ گر کر تباہ ، 18افراد جاں بحق

EjazNews

پاکستان آرمی کے طیارے کو رات گئے حادثہ پیش آیا جس کے نتیجے میں 2 پائلٹ، عملے کے 5 ارکان سمیت 18 افراد جاں بحق ہوئے جبکہ 9 افراد زخمی ہوگئے۔ طیارہ گرنے سے علاقے کے مختلف گھروں میں آگ بھی لگ گئی جس پر قابو پالیا گیا ہے تاہم ملبے تلے دبے تمام افراد کو نکال لیا گیا۔طیارہ حادثے کے بعد راولپنڈی کے تینوں بڑے ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق طیارہ معمول کی تربیتی پرواز پر تھا لیکن حادثہ کس وجہ سے پیش آیا اس کا تعین کیا جارہا ہے۔ طیارہ حادثے کے شہداءکو ہولی فیملی ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے جبکہ 4 افراد کو ڈی ایچ کیو ہسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق عملے کے شہداءمیں لیفٹیننٹ کرنل پائلٹ ثاقب اور لیفٹیننٹ کرنل پائلٹ وسیم شامل ہیں ان کے علاوہ نائب صوبیدارافضل، حوالدارامین اور حوالدار رحمت بھی شہداءمیں شامل ہیں۔
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق پاکستان آرمی ایوی ایشن کا طیارہ تربیتی پرواز پر تھا کہ حادثے کا شکار ہوا اور راولپنڈی میں شہری آبادی والے علاقے موہڑہ کالو میں گر گیا۔
آئی ایس پی آر کے مطابق طیارے کے حادثے میں 2 پائلٹ سمیت عملے کے 5 اہلکار شہید ہوگئے۔پاک فوج کے جاری بیان میں مزید کہا گیا کہ طیارہ رہائشی علاقے میں حادثے کا شکار ہوا تھا جس کے نتیجے میں 12 شہری بھی جاں بحق جبکہ دیگر 12 زخمی ہوگئے۔
حادثے میں جاں بحق ہونے والے افراد کی شناخت محمد جمیل، روبینہ، حبیب، پاری بی بی، فاطمہ بی بی، شبیر، عظمیٰ بی بی، عبدالحفیظ، راحیلہ بی بی، فیضان، فائزہ بی بی، عبدالروف کے ناموں سے ہوئی۔
علاوہ ازیں زخمیوں میں محمد یوسف، شمیم، اقرائ بی بی، سوریہ بی بی، صبا جان، محمد ندیم اور دیگر شامل ہیں۔
واقعے کے بعد کور کمانڈر راولپنڈی لیفٹیننٹ جنرل بلال اکبر جائے حادثہ پر پہنچے جہاں پاک فوج کے افسران نے کور کمانڈر کو حادثے کے حوالے سے بریفنگ دی۔دوسری جانب واقعے میں جاں بحق ہونے والے افراد کی لاشوں پہلے ہولی فیملی ہسپتال اور بعد ازاں سی ایم ایچ منتقل کیا گیا جہاں ان کی شناخت کی گئی۔
اس کے علاوہ جائے حادثہ پر طیارے کا ملبہ ہٹانے کا کام جاری ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  اپوزیشن ووٹ آف کانفیڈنس میں شرکت نہیں کرے گی:مولانا فضل الرحمن

اپنا تبصرہ بھیجیں