sadqa bad train

کیا اب ٹرین حادثے بھی سڑکوں پر چلنے والی گاڑیوں کی طرح ہوں گے

EjazNews

پاکستان کی تاریخ میں ریلوے میں حادثات بہت زیادہ نہیں ہیں۔ریلوے چلی یا نہیں ، گاڑیاں لیٹ آئیں یا دیر سے آئیں سب اپنی جگہ لیکن حادثات اس تواتر کے ساتھ نہیں ہوئے جس طرح کہ موجودہ دور میں ہورہے ہیں۔ کچھ ہی دنوں کے فرق سے یہ ریلوے میں یہ دوسرا حادثہ ہے۔ صادق آباد اکبر ایکسپریس اور مال گاڑی میں آپس میں ٹکرا گئی ہیں۔
پاکستان ریلوے میں جتنی زیادہ تعداد میں ریل گاڑیاں چلائی جارہی ہیں اسی قدر حادثے بھی بڑھنے شروع ہورہے ہیں۔ گزشتہ دنوں بھی ٹرینیں آپس میں ٹکرا گئی تھیں جس کی وجہ سے قیمتی جانوں کے ضیاع کے ساتھ ساتھ عوام کی پریشانیاں کئی دنوں تک ٹرینوں کے لیٹ آنے پر بڑھی رہیں اور اکبرایکسپریس اور مال گاڑی میں صادق آباد کے مقام پر ہونے والا حادثہ پچھلے حادثے سے زیادہ بھیانک تھا ۔ کیونکہ اس میں ابتدائی اطلاعات کے مطابق 10افراد جان کی بازی ہار گئے جبکہ 32زخمی ہوگئے۔ زخمیوں کو قریبی ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔ حادثے کے باعث 4بوگیاں متاثر اور 2ٹریک سے اتر گئیں۔ زخمیوں اور جاں بحق ہونے والوں کی معلومات کیلئے کنٹرول روم قائم کر دیا گیا ہے۔
وزیرریلوے آئے روز نت نئی ٹرینز کا افتتاح کروا رہے ہیںاور وزیراعظم بھی ان کی تعریفوں کرتے ہیں لیکن کیا کوئی بتا سکتا ہے کہ یہ قیمتی جانیں جو گئی ہیں ان کا مقدمہ کس پر درج کروایا جائے۔ وزیرریلوے اگر نئی ٹرینوں کو چلانے کی بجائے موجودہ ٹریک کو درست کرنے اور سسٹم کوبہتر کرنے کی طرف توجہ دیں تو کیا بہتر ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں:  احساس سے متعلق پالیسی بیان جاری کرنے پر خوش ہوں:وزیراعظم

اپنا تبصرہ بھیجیں