shabaz-sharif

خود مخبر بن کر 15 کلو ہیروئن کا کیس بنایا ،پوری قوم اس پر حیران و پریشان ہے:میاں شہبازشریف

EjazNews

اپوزیشن لیڈر میاں شہباز شریف لاہور میں واقع رانا ثنا اللہ کے گھر گئے جہاں پر انہوں نے اہل خانہ سے ملاقات بھی کی اور اس کے بعد میڈیا سے گفتگو بھی کی جس میں ان کا کہنا تھاشہباز شریف نے کہا کہ یہ وقت کی ضرورت ہے کہ ہم رانا ثنا اللہ کے خاندان کا ساتھ دیں اور انہیں اس بات کا احساس نہ ہو کہ پنجاب پی ایم ایل این لاہور چیپٹر کے صدر جیل میں گئے تو وہ اکیلے ہیں، ایسا نہیں ہے مسلم لیگ ن کی پوری قیادت ان کے ساتھ کھڑی ہے۔ عمران خان بدترین سوچ اور ہتھکنڈے سامنے آچکے ہیں، پوری قوم دیکھ رہی ہے کہ یہ بے بنیاد کیس ہے۔ اس سے پہلے نیب پوری کوشش کے باوجود کرپشن اور کک بیکس کا کیس نہ بناسکی اور رانا صاحب نے کہا تھا کہ عمران خان نے اس وقت پنجاب میں ڈی جی کرپشن جو اب نیب کے ڈپٹی چیئرمین ہیں انہیں سخت ہدایت کی تھی کہ رانا ثنا اللہ کے خلاف بدعنوانی کا کیس چاہیے۔ عمران خان اس میں ناکام ہوگئے تو انہوں نے خود مخبر بن کر 15 کلو ہیروئن کا کیس بنایا ہے اور پوری قوم اس پر حیران و پریشان ہے۔
شہباز شریف نے کہا کہ جب سے رانا ثنااللہ کو جوڈیشل ریمانڈ پر بھیجا گیا ہے،ہمیں ان کی اہلیہ اور دوسرے ذرائع سے مصدقہ اطلاعات ملی ہیں کہ انہیں پینے کے لیے پانی اور کھانا نہیں دیا جارہا، آج ان کی اہلیہ کھانے لے کر گھنٹوں کھڑی رہیں، لیکن رانا ثنااللہ کو کھانا، پانی اور ادویات پہنچانے کی اجازت نہیں دی گئی۔ نئے پاکستان میں عمران خان کا ریاست مدینہ کا تصور ہے جہاں جیل میں کھانا اور پانی بھی نہیں دیا جارہا۔
مسلم لیگ(ن) کے صدر نے کہا کہ رانا ثنا اللہ کے دل کی سرجری ہوئی ہے اور مجھے آج ان کی اہلیہ نے بتایا کہ ان کی دائیں آنکھ میں چند ماہ پہلے کوئی انفیکشن ہونے کے باعث ان کی بینائی متاثر ہوئی ہے اور وہ اس کی دوائی لے رہے ہیں، اس کے علاوہ ان کی کمر میں بھی درد رہتا ہے اور رانا ثنااللہ نے کبھی ہم سے ذکر نہیں کیا۔ عمران خان آپ فاشسٹ ہیں، آپ میں ہٹلر کے جراثیم ہیں لیکن اگر آپ قیدی کے ساتھ جو ایک رکن قومی اسمبلی ہیں، ان کی زندگی اور بیماری کے ساتھ کھیلیں گے تو نہ دنیا معاف کرے گی اور نہ خدا۔
اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا میں فی الفور مطالبہ کرتا ہوں کہ رانا ثنااللہ کو ادویات، کھانا اور پانی ان کے حوالے کیا جائے اور ضروریات زندگی فراہم کی جائیں،اس میں تاخیر پر مجرمانہ غفلت کے عمران خان ذمہ دار ہوں گے۔مجھے اطلاع ملی کہ ان کے کمرے میں پنکھا اور بجلی کا بلب بھی نہیں ہے،وہ کوئی قتل کرکے تو نہیں آئے، دشمن بھی ایسا نہیں کرتا۔میری تمام پاکستانیوں اور قومی اداروں سے دردمندانہ اپیل ہے کہ رانا ثنا اللہ کی ادویات اور علاج میں پاکستان تحریک انصاف کی حکومت جو مجرمانہ غفلت کررہی ہے اس کا بھرپور نوٹس لیا جائے اور فی الفور انہیں طبی سہولیات فراہم کی جائیں ورنہ کچھ ہوا تو اس کی سو فیصد ذمہ داری عمران خان اور ان کی حکومت پر آئے گی۔

یہ بھی پڑھیں:  حادثے میں چار افراد ہلاک اور دوزخمی :بیٹے کی نامزدگی پر کشمالہ طارق کیا کہتی ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں