world music day

موسیقی کا عالمی دن،پاکستانی فنکاروں نے دنیا بھر میں پاکستانی موسیقی کو پہنچایا

EjazNews

پاکستان سمیت دنیا بھر میں 21جون کو موسیقی کے عالمی دن کے طورپر منایا جاتا ہے۔1981ءمیں پیرس سے میوزک کے عالمی دن کی ایسی ابتداءہوئی کہ اب یہ پوری دنیا میں منایا جاتا ہے۔ اپنی کیفیات کے اظہار کیلئے موسیقی کو انسان نے کب ذریعہ بنایا اس کا پتہ تو نہیں لگایا جاسکا کیونکہ یہ ہزاروں سال پراین بات ہے ۔ آثار قدیمہ سے آلات موسیقی برآمد ہوئے جو پتھروں سے بنے ہوئے تھے۔ اس سے یہ بات کہنا مشکل نہ ہوگا کہ موسیقی کی تاریخ انسانی تاریخ جتنی تو نہ پرانی ہو لیکن آس پاس ضرور ہے۔ برصغیر پاک و ہند میں موسیقی کی ابتداءکو اگر یہ کہا جائے کہ مغلوں کے دور میں ہوئی تو یہ غلط ہوگا ۔ مغلوں سے بہت پہلے یہاں موسیقی لوگوں کی زندگیوں کا حصہ تھی۔ جہاں بڑے بڑے ہندو موسیقی کے استاد پائے جاتے تھے۔ لیکن جن لوگوں کا ہمیں پتہ ہے ان میں امیر خسرو ، تان سین اور بیجو باورا ، کے ایل سہگل اور مختار بیگم ہیں۔ ان کے علاوہ کلاسیکل اور نیم کلاسیکل ایسے ہزاروں موسیقار ہیں جو بے نامی میں اس دنیا سے چلے گئے۔
روح کی غذا کہلائی جانے والی موسیقی کو پاکستان نے دنیا بھر میں اپنی مشرقی پہچان کے ساتھ متعارف کروایا۔ پاکستان کے عظیم فنکاروں میں نور جہاں، مہدی حسن، نصرت فتح علی خان ، فریدہ خانم ، اقبال بانو، عالم لوہار، خورشید بیگم، غلام علی، پرویز مہدی ، احمد رشدی ، مسعود رانا ،شوکت علی، ریشما، عابدہ پروین ،عطاءاللہ عیسیٰ خیلوی، عالمگیر ، نازیہ حسن،اسد امانت علی خان، امجد علی صابر،مسرت نذیر کے ساتھ اگر ہم ماسٹر عنایت حسین اور خواجہ خورشید کا ذکر نہ کریں تو زیادتی ہو گی۔ یہ وہ لوگ تھے جن کے فن نہ سرحدوں کو عبور کیا اور دیار غیر میں ان کی موسیقی گنگنائی بھی گئی اور چوری بھی کی گئی۔ پاکستان کے موسیقار ہمیشہ سے اپنی ایک الگ پہچان رکھتے ہیں اور اسی وجہ سے دنیا ان کے فن کی معترف ہے۔
اگر ہم دور حاضر کی بات کریں تو راحت فتح علی خان، علی عظمت، عاطف اسلم، علی ظفر، مومنہ مستحسن،حدیقہ کیانی،شہزاد رائے،میشا شفیع،عارف لوہار، وارث بیگ، حمیرا ارشد،علی حیدر، الن فقیر، حسن جہانگیر، قرا¿ة العین بلوچ،صابرب برادران ایسے نام ہیں جنہوںنے پاکستانی موسیقی کو دنیا بھر میں متعارف کروایا۔
موسیقی کا آج عالمی دن ہے ۔ اس کو جو لوگ منانے چاہتے ہیں وہ اپنے پسند کی موسیقی کو تنہائی میں سنیں اور محظوظ ہوں ۔ یہ موسیقی آپ کی اپنی پسند کی ہونی چاہیے چاہے پوپ ہو ، چاہے کلاسیکل ہو، ٹھمری ہو ، غزل ہو،قوالی ہو جو آپ کی مرضی ہو ۔

یہ بھی پڑھیں:  میں پنجاب جارہی ہوں ،فلم کی پروموشن کیلئے:مہوش حیات

اپنا تبصرہ بھیجیں