Shah+Jawad

ٔایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف کا دورہ پاکستان

EjazNews

ایرانی کی تاریخ صدیوں پر محیط ہے۔ان صدیوں کو ایرانیوں نے کسی نہ کسی طرح سمیٹ کر رکھا ہوا ہے۔ حکومت چاہے کسی کی بھی ہو ایرانی اپنے ایرانی ہونے پر کبھی سمجھوتا نہیں کرتے۔
امریکی وزیرخارجہ ڈونلڈ ٹرمپ نے بذات خود ایران کے ساتھ ہونے والے معاہد ے کو کالعدم قرار دے دیا ۔ سمجھدار ایرانیوں نے ہمیشہ سے اپنے ہمسایو ں کے ساتھ اچھے تعلقات قائم رکھے ہوئے ہیں۔ ایران اور امریکی کی بڑھتی ہوئی کشیدگی سے پوری دنیا میں ایک تشویش کی لہر ہے کہ کہیں یہ خطے کسی نئی جنگ کی لپیٹ میں نہ آجائے ۔ ایرانیوں کیلئے تو جنگ نئی بات نہیں وہ اس سے پہلے بھی جنگیں لڑ چکے ہیں اور امریکہ تو جنگیں لڑتا ہی رہتا ہے۔ لیکن ہمارا خطہ ایک نئی جنگ کا متحمل نہیں ہوسکتاکیونکہ یہ خطہ تیسری دنیا بن کر رہ گیا ہے جہاں بنیادی سہولتوں کو بھی انسان ترس رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  جمعیت علمائے اسلام کو مارچ کی اجازت مل گئی پر شرائط کے ساتھ
وزیراعظم عمران خان نے بھی ایرانی وزیر خارجہ سے ملاقات کی

ایرانیوں کی خارجہ پالیسی ہمیشہ سے متعدل رہی ہے۔ وہ ہمیشہ سے ہی اعتدال کی پالیسی کو اپنائے ہوئے ہیں۔
سمجھدار ایرانی وزیر خارجہ گزشتہ روز پاکستان پہنچے جہاں سب سے پہلے ان کی ملاقات اپنے ہم منصب پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کے ساتھ ہوئی۔ جس میں تما م تصفیہ طلب امور کے سفارتی سطح پر حل ڈھونڈنے کی بات ہوئی۔ دونوں رہنمائوں نے دوطرفہ معاملات پر تعاون رکھنے پر بھی اتفاق جبکہ اس بات کا بھی اعادہ کیا گیا کہ خطے میں کشیدگی کسی کے بھی مفاد میں نہیں ہے۔
ایرانی وزیر خارجہ کی دوسری ملاقات وزیراعظم پاکستان عمران خان سے ہوئی اور تیسری ملاقات چیف آف آرمی سٹاف سے ہوئی جس میں ان کا کہنا تھا کہ جنگ کسی کے مفاد میں نہیں ہے اور جنگ سے دور رہنے کی ہر ممکن کوشش کرنی چاہیے۔

چیف آف آرمی سٹاف نے بھی ایرانی وزیر خارجہ سے ملاقات کی

ایران کی طرف سے آنے والے جنگجو بھی ایک مسئلہ ہیں۔ پچھلے دنوں ایران کی طر ف سے آنے والے جنگجوئوں نے پاکستانی فورسز کے جوانوں کو شہید کیا جس کا معاملہ پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے اپنے دورئہ کے مقام پر بھی اٹھایا ۔ جس کے بعد اعادہ کیا گیا کہ دونوں ممالک اپنے اپنے بارڈر سکیور کریں گے۔
بحریف ہمسائے ہمسائے ہوتے ہیں اور ہمسایوں سے اچھے تعلقات دونوں ممالک کے مفاد میں ہیں۔ پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اپنے ہم منصب کے اعزاز میں عشائیہ بھی دیا۔

یہ بھی پڑھیں:  سیاست میں کوئی دشمن نہیں ہوتا تقریریں سنتے ہوئے یہ خیال رکھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں