huawei

ہواوے فونز پر گوگل کی سروسز معطل

EjazNews

ہواوے ڈیوائسز استعمال کرنے والے صارفین دنیا میں تو بہت ہوں گے لیکن دنیا کے ساتھ ساتھ پاکستان میں بھی اس کی اچھی خاصی تعداد موجود ہے۔ گوگل کے ہواوے پر اینڈرائیڈ سسٹم کو معطل کرنے کے اقدام سے دنیا بھر کے صارفین کے ساتھ ساتھ پاکستانی صارفین بھی بری طرح متاثر ہوں گے۔ فی الحال تو اینڈرائڈ ایپس اور گوگل پلے سروس کو استعمال کرسکیں گے تاہم امکان ظاہر کیا جارہا ہے کہ رواں سال گوگل کے اگلے ورژن کے لانچ ہونے کے بعد یہ ہواوے کی ڈیوائسز پر دستیاب نہیں ہوسکیں گی۔ڈائون نیوز کے مطابق البتہ ہواوے کے صارفین اینڈرائڈ آپریٹنگ سسٹم اوپن سورس لائسنس کے ذریعے اس نئے ورژن کو استعمال کرسکیں گے۔
یاد رہے یہ پابندی ایسے وقت میں لگائی گئی جب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چینی کمپنی ہواوے کو ان کمپنیوں کی فہرست میں شامل کیا جو امریکی فرمز کے لائسنس کے بغیر کاروبار نہیں کرسکیں گی۔ہواوے کمپنی پچھلے ایک عرصے سے زیر عتاب ہے ۔ ہواوے کی سی ای او کی بیٹی کچھ عرصہ کینیڈا کی جیل میں بھی گزار کر آئی ہیں۔ اوور اس طرح کے بہت سے اقدامات بھی منظر عام پر آئے ہیں۔
شنید یہ بھی ہے کہ ہواوے اپنا آپریٹنگ سسٹم بنانے جارہا ہے۔ جس کی مختلف چینلز کے ذریعے تصدیق بھی ہو گئی ہے کہ ہواوے اپنا آپریٹنگ سسٹم بنانے جارہا ہے ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق ہواوے کے موبائل چیف رچرڈ یو چینگ ڈونگ کا کہنا تھا کہ اگر ہواوے پر گوگل اور اینڈرائیڈ سروسز مستقل طور پر معطل ہوگئیں تو ایسی صورتحال سے نمٹنے کے لیے ان کی کمپنی نے پہلے سے ہی اپنا ایک آپریٹنگ سسٹم تیار کرلیا ہے۔اور ضرورت پڑنے پر موبائل فونز اور کمپیوٹرز کے لیے اس سسٹم کو متعارف کروادیا جائے گا۔
گوگل کی جانب سے لگائی جانے والی پابندی کے بعد خیال کیا جا رہا تھا کہ گوگل کے اس اقدام کے بعد دنیا بھر میں بڑی تعداد میں موجود ہواوے کے موبائل فونز پر اثر پڑے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  نئے امریکی صدر جو بائیڈ ن دو بار پاکستان کا دورئہ بھی کر چکے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں