لاڑکانہ کی تحصیل میں بڑھتے ایڈز کے مریض لمحہ فکریہ ہے

EjazNews

سندھ کا علاقہ لاڑکانہ ویسے تو بہت سے اور خصوصیات کی وجہ سے مشہور ہے لیکن ان دنو ں اس علاقہ کی ایک تحصیل رتو ڈیرو نے ایڈز کے مریضوں کی وجہ سے اسے خبرو ں میں رکھا ہوا ہے۔ پاکستان کے دور دراز کے ایک چھوٹے سے علاقے میں ایڈز کے مریضوں کی بڑھتی ہوئی تعداد پورے معاشرے کے لیے لمحہ فکریہ ہے ۔ جاری تفصیلات کے مطابق 5ہزارس ے زائد افراد کی سکرینک کی جا چکی ہے۔ جس کے بعد یہاں ایڈز کے مریضوں کی تعداد 265ہو گئی ہے بدقسمتی سے یہاں بچوں کی تعداد 181ہے۔میڈیا پر خبریں آنے کے بعد یہاں سکریننگ کیلئے یکمپ لگائے گئے ہیں جن میں روز کی بنیاد پر لوگوں کی سکریننگ کی جارہی ہے۔ اور ہر روز مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔
خوش آئند بات یہ ہےکہ حقائق چھپائے نہیں جارہے اور پوری تندہی سے سکریننگ کا عمل انجام دیا جارہا ہے جس سے امید کی جاتی ہے یہ مرض پھیلنے نہیں پائے گا۔
کیا ہی اچھا ہو کہ یہ سکریننگ کا عمل پورے پاکستان میں رفتہ رفتہ کیا جائے کیونکہ کچھ ایسے انکشافات بھی سامنے ہیں کہ ڈاکٹر کے بھیس میں موجود ایک شخص جس سرنج سے لوگوں کو ٹیکے لگا رہا تھا اس سے بھی اس مرض کے پھیلائو میں اضافہ ہو ا اور اس کے ساتھ ساتھ انتقال خون بھی اس مرض کے بڑھنے کا سبب بنا۔ اب جو بھی ہوا اس کو آگے نہ ہونے کے لیے اقدامات کیے جانے چاہیے تاکہ دوبارہ کوئی ایسا واقعہ نہ ہو ۔

یہ بھی پڑھیں:  خسارے میں چلنے والے کن اداروں اور کمپنیوں کا فرانزک آڈٹ ہونے جارہا ہے؟

اپنا تبصرہ بھیجیں