کیا نشویٰ کو انصاف ملے گا؟

EjazNews

نشویٰ کے والد کی آہ صرف وہی سمجھ سکتا ہے جو صاحب اولاد ہے۔ اپنے سامنے کسی دوسرے کی غلطی سے اپنی بچی کو مرتے ہوئے دیکھنے کی کیفیت لفظوں میں بیان کرنا ممکن نہیں ہے۔ نشویٰ کے والد قیصر علی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا میری بیٹی نے بہت ہمت کی لیکن وہ ہار گئی ،انہوں نے آہ بھری آواز سے اپیل کی خدارا سب مل کر آواز اٹھائیں تاکہ کل کسی اور کی بیٹی نہ جائے اور میں کھڑا سوچ رہا تھا کہ یہ کوئی پہلا واقعہ ہے خود سے جواب ملا نہیں، ان واقعات میں کسی کو عبرت کانشان بنایا گیا جواب ملا نہیں، آج تک جزا اور سزا کا کوئی ایسا سسٹم بنا جس سے مجرموں کو پکڑ کر قرار واقعی سزا مل سکا اس کا بھی جواب نہ میں تھا۔ آنسو میرے بھی ٹپک پڑے تھے اپنی بیٹی کا سوچ کر۔ لیکن کمبخت یہ غریبوں کو سمجھ ہی نہیں آتا کہ نشویٰ اگر کسی طاقتور شخص کی بیٹی ہوتی تو آج ہر ایوان کے دروازے حل چکے ہوتے ایک بھوچال کی کیفیت ہوتی، بڑے بڑے کالم نویس اپنی رائے دہی کا مظاہرہ کر رہے ہوتے۔ دو چار لاکھ کا چیک دے کر نشویٰ کے باپ کو سمجھایا جائے گا کہ مرنے والی تو مر گئی ، چھوڑو تم یہ پیسے لواور باقیوں کی زندگی بہتر بناﺅ۔ اب تمہار ی بیٹی تو جنت میں ہوگی ، آرام سے ہوگی مزے سے ہوگی۔ بڑے بڑے فلاسفر سمجھائیں گے۔ لیکن کیا نشویٰ کو انصاف ملے گا؟۔
خیال رہے کہ نشویٰ کو غلط انجکشن لگایا گیا تھا، طبیعت بگڑنے پر اسے نجی ہسپتال لے جایا گیا اور موت اور زندگی کی کشمکش میں موت بازی لے گی اور نشویٰ زندگی کی بازی ہار گئی۔ مقدمہ درج ہو چکا ہے، کچھ چھوٹا سٹاف بھی گرفتارہے، ہسپتال کے مالک کو ایک معمولی درجے کا نوٹس بھی بھجوایا جاچکا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  بجٹ آئی ایم ایف کی مشاورت سے نہیں بلکہ آئی ایم ایف نےبنایا :اپوزیشن لیڈر

اپنا تبصرہ بھیجیں