Imran-Khan

ٹیم میں تبدیلیوں کا مقصد اپنی ٹیم کو جتوانا ہوتا ہے: وزیراعظم عمران خان

EjazNews

وزیراعظم عمران خان نے خیبر پختونخوا کے ضلع اورکزئی میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا ے کہ 27سال پہلے اس علاقے میں آیا تھا، قبائلی علاقوں میں گھوما اور ایک کتاب بھی لکھی۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ چلی تو ان علاقوں کو جانتا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ قبائلی علاقوں کے لوگ ہماری فوج ہیں ، بدقسمتی سے اس وقت جو وزیراعظم تھا اسے قبائلی علاقوں کا نہیں پتہ تھا لوگوں کو نہیں پتہ چلا ہمارے قبائلی علاقوں میں کیسی تباہی پھیلی۔قبائلی علاقے کے لوگوں کو نقل مکانی کرنی پڑی۔ اس کی تکلیف جانتا ہوں۔ کوئی وزیراعظم قبائلی علاقوں میں اتنا نہیں گھوما جتنا میں جارہا ہوں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پی ٹی ایم لوگوں کی مشکلات کی صحیح بات کرتی ہے لیکن ان کا لہجہ ہمارے ملک کے لیے ٹھیک نہیں۔ جو لوگ تکلیف سے گزرے ان کو اکسانا ٹھیک نہیں، لوگوں کے زخموں پر نمک چھڑک کر بھڑکانا درست نہیں۔ لوگوں کو بھڑکایا جاتا ہے لیکن کوئی حل نہیں دیا جاتا ، پی ٹی ایم بھڑکانے کی بجائے ان لوگوں کی مدد کرے۔
وزیراعظم کا کہنا تھا کہ قبائلی علاقوں کے بچوں کو تعلیم دینی ہے، نوکریاں دینی ہے، نوجوانوں کو سود کے بغیر قرضے دیں گے تاکہ روزگار چلا سکیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ قبائلی علاقوں کو اپنے مستقل کی منصوبہ بندی کرنا ہوگی یہاں کوئی سرمایہ کاری کیلئے نہیں آتا ۔ ہم سرمایہ کاری لائیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ مدرسے کے بچے میرے بچے ہیں ، مجھے ان کی فکر ہے، مدرسوں میں 26لاکھ بچے پڑھتے ہیں، چاہتے ہی مدرسوں کے بچے دنیاوی اور سائنسی تعلیم بھی پڑھیں۔

یہ بھی پڑھیں:  لائن آف کنٹرول پر اشتعال انگیزی،4شہری شہید11زخمی

[the_ad id=”4237″] وزیراعظم کا کابینہ میں تبدیلی کے حوالے سے کہنا تھا کہ ایک اچھا کپتان مسلسل اپنی ٹیم کی طرف دیکھ رہا ہے، کئی مرتبہ کپتان پرانے کھلاڑیوں کی جگہ نیا کھلاڑی لاتا ہے ،کپتان کا صرف ایک مقصد ہوتا ہے اپنی ٹیم کو جتوائے ، میں نے اپنی ٹیم میں بیٹنگ آرڈر بدلا ہے آئندہ بھی بدلوں گا۔ سارے وزیروں کو کہتا ہوں انہیں سامنے لائوں گا جو فائدہ مند ہوں،۔

اپنا تبصرہ بھیجیں