Health_Guide

ہیلتھ گائیڈ

EjazNews

موسم بہار اورڈائٹنگ
اگر آپ وزن گھٹانا چاہتے ہیں تو گرمیوں اور سردیوں کی شروعات میں یہ پلان ایک جانب رکھ دی اور موسم بہار میں اپنے منصوبے کی تکمیل کریں۔ جارجیا اسٹیٹ یونیورسٹی اٹلانٹا میں ہونے والیے ایک تحقیق کے مطابق جانوروں کے ساتھ ساتھ انسانوں کی بھوک بھی بہار کے موسم میں اعتدال پر آجاتی ہے۔ حال ہی میں اٹلانٹا میں ہونے والی اس تحقیق میں 315افراد پر ڈائٹنگ پلان آزمایا گیا جس سے اوسطاً 222 حرارے ہر روز گھٹانے کے تائج حاصل ہو گئے۔ پہلے یہ خیال کیا جاتا تھا کہ موسم جسم کو متناسب رکھنے میں نمایاں کر دارادا نہیں کرتے پھر یہ مفروضہ حقیقت سے قریب لگا کر سرمایہ میں لوگوں کی بھوک بڑھتی ہے اور وہ جسم کو گرم رکھنے اور قوت مدافعت بڑھانے کے لئے کم مقدار میں خوراک استعمال نہیں کرتے اور کسی قسم کا پرہیز نہیں کرتے جس کے نتیجہ میں وزن بڑھنے لگتا ہے۔ گرمیوں میں صرف ایک خیال ہے کہ ہم کھانے کی مقدار میں کمی کرتے ہیں جبکہ اس موسم میں ایشیائی باشندے ورزش کرنا کم کر دیتے ہیں بہتر یہی ہے کہ بہار کے موسم میں خوراک کو معتدل رکھیں اور پورا کر لیں وزن کم کرنے کا خواب!

یہ بھی پڑھیں:  ایک تکلیف دہ مرض اپنڈکس

خبردار! پیرا سٹال مول ہر درد کی دوا نہیں
درد کش دوا پیرا سٹا مول دنیا بھر میں بغیر ڈاکٹر نسخے کے کھلے عام فروخت ہوتی ہے۔ اب امریکی ادارے فڈ اینڈ ڈرگ کے ماہرین کا کہنا ہے کہ اس دوا کی زیادہ مقدار سے جگر کو نقصان پہنچ سکتاہے۔ پیرا سٹال مول درد اور بخار میں عام استعمال ہوتی ہے۔ امریکا میں اس دوا کوایسٹو مینو فن کہا جاتاہے اور یہ بازار میں Tylenolکے نام سے فروخت ہوتی ہے۔ ایک امریکی خاتون کا کیس سامنے آیا جنہوں نے آدھے سر کے درد کے علاج کے لئے ٹائلے نول کی گولیاں کھائیں وہ کہتی ہیں کہ میں نے کبھی مقررہ مقدار سے زیادہ دوا نہیں لی لیکن انہیں فوری طور پر اپنے جگر کو ٹرانسپلانٹ کرانا پڑا۔ ان خاتون کا کہنا ہے کہ ’’و ہ کبھی سوچ بھی نہیں سکتی تھیںکہ ایک عام دوا جسے کھانے سے جسم کے دوسرے درد رفع ہو جاتے تھے انہیں اس قدر بیمار کر دے گی۔ ڈاکٹر حضرات کا کہنا ہے کہ عام طور پر لوگ یہ دوا اس لئے پسند کرتے ہیں کیونکہ یہ درد ختم کرنے والی دیگر دوائوں کے مقابلے میں نہایت موثر ہے۔یہ معدے پر اثر نہیں ڈالتی اور عموماً اس کے سائیڈ ایفکٹس کم ہوتے ہیں مگر ایک دن میں تین یا چار گولیاں یا اس سے زیادہ مقدار استعمال کرنے سے جگر کو شدید نقصان پہنچ سکتا ہے اور اس سے موت بھیواقع ہو سکتی ہے چنانچہ کافی عرصہ پہلے سے ایسی تمام درد کش ادویات کی تشہیری مہم کے دوران صارف یا مریض کو ہدایت کی جاتی رہ ہے کہ طبیعت زیادہ خراب ہو تو ڈاکٹر سے رجوع کریں۔ لہٰذا یہ خیال درست نہیں رہا کہ مریض 500ملی گرام کی گولی ہرچار یا چھ گھنٹے بعد لے سکتا ہے، یہ مقدار بہت زیادہ ہے اور امریکی ادارے ایف ڈی اے کے عہدیداروں کو اس دوا کے ایک ڈاکٹری نسخے کی زیادہ سے زیادہ 250ملی گرام مقرر کرنی چاہئے۔

یہ بھی پڑھیں:  نیند کی کمی سے موٹاپابھی ہو سکتا ہے

دھوپ سے بچیں
جب آپ ماں بننے جارہی ہوں اور نیا نیا حمل قرارپائے تو بچے کی حفاظت کے لئے دھوپ سے بچائو ضروری ہے، برطانوی محقق کہتے ہیں ابتدائی تین ماہ میں بچے کی نشوونما بہت تیزی سے ہوتی ہے، انہوں نے کہا کہ اس دور میں ڈھیلے ڈھالے لباس ہی نہ پہنیں پانی بھی خوب پئیں اورص حت بخش غذا تھوڑی تھوڑی کر کے دن میں کئی بار کھائیں۔
بعض تحقیقی مطالعوں سے پتہ چلتا ہے کہ حمل کے پہلے بارہ ہفتوں کے دوران شکم مادر میں بچہ گرمی سے بہت حد تک متاثر ہوتا ہے اور اگر بیرونی ماحول میں اسے زیادہ گرمی سے واسطہ پڑے تو پیدائش کے وقت اس کا وزن معمول سے تھوڑا کم ہو سکتا ہے۔ اس کے برعکس حمل کے آخری تین ماہ کے دوران درجہ حرارت کم رہے تو اس صورت میں بھی بچے کا وزن کم ہو سکتا ہے۔ ماہرین نے اس بات پرزور دیا ہے کہ خواتین اس خبر سے تشویش میں نہ پڑیں۔ بلکہ صرف خود کو دھوپ سے بچائیں گرمی کی زیادتی جسم کے درجہ حرارت کو توبڑھاتی ہی ہے لیکن اس سے تکان، حلق خشک ہونا اور دماغ بھی خالی خالی رہتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ہمارے خطے میں سردیوں میں اموات کیوں زیادہ ہوتی ہیں؟
کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں