Sheikh_Rashid_Ahmed

دستانے پہنے ہوئے ہاتھ پاکستان کو قربانی کا بکرا بنانا چاہتے تھے:وزیر داخلہ

EjazNews

وزیر داخلہ شیخ رشید نے پریس کانفرنس کی اس پریس کانفرنس کا مرکزی محور نیوزی لینڈ کی ٹیم کا دورئہ پاکستان منسوخ کرنا تھا۔
پریس کانفرنس میں ان کا کہنا تھا صبح نیوزی لینڈ کے سکیورٹی حکام نے ہمارے سکیورٹی حکام کو دورے کی منسوخی کے حوالے سے آگاہ کیا حالانکہ نیوزی لینڈ کی ٹیم کی سکیورٹی کے لیے فول پروف سکیورٹی انتظامات کیے گئے تھے، ان کی سکیورٹی پر فوج، ایس ایس جی اور انفینٹری موجود تھی، 4 ہزار پولیس اہلکار موجود تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم نے انہیں اس بات پر بھی راضی کرنے کی کوشش کی کہ بغیر تماشائیوں کے یہ میچ کھیلا جائے لیکن جب وہ اس پر بھی راضی نہ ہوئے تو ہمارے ملک کے ذمہ داروں نے وزیر اعظم سے تاجکستان میں بات کی۔

بقول وزیر داخلہ تاجکستان میں وزیر اعظم کو تمام صورتحال سے آگاہ کیا گیا اور انہوں نے نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن سے بات کی اور انہیں کہا کہ ہمارے ملک میں امن و امان بہترین ہے، ہم گارنٹی دیتے ہیں کہ یہاں سکیورٹی کا کوئی مسئلہ نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  پاکستان ہر فورم پر فلسطینیوں کے ساتھ کھڑا رہا ہے:وزیراعظم

ان کا کہنا تھاعمران خان کی بات پر نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم نے کہا کہ سکیورٹی خطرات کا مسئلہ نہیں ہے لیکن ہمیں اس قسم کی اطلاع ہے کہ جب ٹیم باہر نکلے گی تو باہر اس پر کوئی حملہ ہو سکتا ہے لہٰذا انہوں نے یکطرفہ طور پر یہ دورہ منسوخ کردیا۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ ان کی صوابدید پر ہے، ہمارے اداروں کے پاس کسی سکیورٹی خطرات کی اطلاع نہیں ہے، نہ ہی ہمیں کوئی سکیورٹی کی دھمکی موصول ہوئی۔

وزیر داخلہ نے اپنے بات کو بڑھاتے ہوئے کہا کہ ایک ایسے موقع پر جب پاکستان، دنیا میں کلیدی کردار ادا کررہا ہے، پاکستان اس وقت دنیا میں امن اور سکون کا سب سے بڑا داعی ہے اور دہشت گردی کے خلاف مربوط، مضبوط اور جامع ادارے رکھتا ہے تو ایسے میں اس دورے کو ایک سازش کے تحت ختم کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ اب ان کا مسئلہ ہے کہ وہ اس سلسلے میں کیا فیصلہ کرتے ہیں، ہمارے نیشنل مینجمنٹ کرائسز سیل اور نیپ نے کافی کام کیا ہے، ان کو راضی کرنے کی کوشش کی ہے لیکن نیوزی لینڈ کی حکومت نے خود سے یہ فیصلہ کیا کہ وہ یہ دورہ منسوخ کرتے ہیں۔
ایک سوال کے جواب میں وزیر داخلہ کا کہنا تھا مجھے نہیں پتا کہ اس سازش کے پیچھے کون ہے، دستانے پہنے ہوئے ہاتھ پاکستان کو قربانی کا بکرا بنانا چاہتے تھے، افغانستان میں کوئی خونریزی نہیں ہوئی، دنیا نے 20 سال بعد دستخط کر کے 30 تاریخ کو اپنی مرضی سے انخلا کیا۔

یہ بھی پڑھیں:  تحریک لبیک کا جو مقصد ہے، میں یقین دلاتا ہوں کہ وہی میرا اور میری حکومت کا مقصد ہے:وزیراعظم

اپنا تبصرہ بھیجیں