Mullah-Mohammad-Hasan-Akhund

افغانستان کے نئے وزیراعظم کے بارے میں جانتے ہیں

EjazNews

افغانستان کے نئے وزیراعظم جہاں مذہبی حوالے سے شہرت رکھتے ہیں وہی پر ان کا سیاست میں ایک طویل تجربہ بھی ہے۔ کیونکہ اس سے قبل طالبان کی حکومت میں بھی وہ اہم عہدوں پر براجمان رہے ہیں۔

افغانستان کے نئے عبوری وزیراعظم ملا محمد حسن اخوند گزشتہ 20 برس سے طالبان کے طاقتور فیصلہ ساز ادارے رہبری شوریٰ کونسل کے سربراہ بھی ہیں۔

ان کا تعلق قندھار سے ہے جو طالبان کی جائے پیدائش ہے، وہ طالبان کے بانیوں میں سے بھی ہیں۔

ملا محمد حسن اخوند کا نام اقوام متحدہ کی دہشتگردوں کی فہرست میں بھی موجود ہے ۔

ملا محمد حسن اخوند نے مذہبی پس منظر کی وجہ سے اچھی شہرت حاصل کی۔ وہ فوجی پس منظر کی بجائے مذہبی رہنما ہیں اور اپنے کردار اور عقیدت کے لیے جانے جاتے ہیں۔

ملا حسن 20 سال تک شیخ ہبت اللہ اخوندزادہ کے قریب رہے ہیں۔

ملا حسن طالبان کی گزشتہ حکومت میں اہم عہدوں پر بھی رہ چکے ہیں۔ وہ وزیر خارجہ اور اس کے بعد سابق وزیراعظم ملا محمد ربانی اخوند کے دور میں نائب وزیراعظم کے عہدے پر فائز رہے ۔

یہ بھی پڑھیں:  قطر کے ساتھ عرب ممالک کے تعلقات یونہی بحال ہو گئے ہیں؟

ملا حسن اخوند پاکستانی مدرسے میں زیر تعلیم رہ چکے ہیں جس کے بعد انہوں نے سوویت یونین کیخلاف لڑائی کے دوران حزب اسلامی کے ایک دھڑے خالص میں شمولیت اختیار کی ۔

1989سے 1992کے دوران بھی وہ پاکستان میں رہائش پذیر رہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں