Punjab_Bureaucrats

تین سال میں آئی جی اور چیف سیکرٹریز، پنجاب میں کتنی بار بدلے گئے ہیں؟

EjazNews

وزیراعظم سے وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار کی ملاقات ہوئی، اس دوران نئے چیف سیکرٹری اور آئی جی پنجاب کے پینلز میں موجود تین تین افسروں کے ناموں پر تفصیلی غور کیا گیا، وزیراعظم نے کامران علی افضل کو چیف سیکرٹری اور  آئی جی پنجاب تعینات کرنے کی ابتدائی منظوری دیدی تھی۔

وفاقی کابینہ کے اجلاس سے منظوری کے بعد اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کی طرف سے باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا ہے۔

نئے آئی جی پنجاب رائو سردار تعینات ہو چکے ہیں جبکہ چیف سیکرٹری پنجاب کا عہدہ ڈاکٹر کامران افضل کے حصے میں آیا ہے۔

سابق آئی جی پنجاب انعام غنی کو آئی جی پاکستان ریلویز تعینات کر دیا گیا ہے۔

تحریک انصاف کے دور حکومت میں پنجاب میں پانچویں چیف سیکرٹری اور ساتویں آئی جی پنجاب کو تعینات کیا جارہا ہے۔ اس طرح چیف سیکرٹری کو پنجاب میں اوسطاً 9ماہ اور آئی جی کو 6ماہ کام کرنے کا موقع ملا۔

یہ بھی پڑھیں:  لاک ڈاؤن سے1کروڑ 80لاکھ افراد بے روزگار ہوسکتے ہیں 10لاکھ چھوٹے ادارے ہمیشہ کے لیے بند ہوسکتے ہیں :وزیر منصوبہ بندی اسد عمر

موجودہ دور حکومت میں اکتوبر2018ء میں اکبر حسین درانی چیف سیکرٹری پنجاب تعینات رہے۔ بعد ازاں نومبر 2019ء میں یوسف نسیم کھوکھر، اپریل2020ء میں میجر (ر) اعظم سلیمان خان اور بعد ازاں جواد رفیق ملک تعینات ہوئے۔ اس طرح آئی جی پنجاب کی تعیناتیوں اور تبادلوں کے حوالے سے موجودہ حکومت کے دور میں 11ستمبر 2018ء تک ڈاکٹر سید کلیم امام آئی جی تعینات رہے۔

11ستمبر 2018ء سے 15اکتوبر 2018ء تک صرف ایک ماہ محمد طاہر، 15اکتوبر 2018ء سے 17اپریل 2019ء تک امجد جاوید سلیمی،17اپریل2019ء سے 28نومبر 2019ء تک کیپٹن (ر) عارف نواز خان، 28نومبر 2019ء سے 9ستمبر2020ء تک شعیب دستگیر اور 9ستمبر 2020ء سے 9ستمبر2021ء تک انعام غنی آئی جی رہے ہیں۔ جو تقریباً 363دن تعینات رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں