jamsheed iqbal chema

مشیر وزیراعظم جمشید چیمہ کے2کمسن بیٹوں کو زہر دے دیا گیا

EjazNews

مصطفی ٹائون کے علاقہ میں وزیراعظم کے مشیر جمشید چیمہ کے دو بیٹوں کو زہر دینے کے الزام میں گھریلو ملازمین کے خلاف مقدمہ درج کرکے5ملازمین کو حراست میں لے لیا گیا۔

جمشید چیمہ کی اہلیہ ایم پی اے مسرت چیمہ کی جانب سے درج کروائی جانے والی ایف آئی آر میں موقف اختیار کیا گیا کہ میرے بیٹے 9سالہ بیٹے آحل جمشید کی اچانک طبیعت خراب ہوئی تو میں اسے حمید لطیف ہسپتال لیکر گئی ۔نیوٹریشن سپیشلسٹ ڈاکٹر عظمت نے بتایا کہ کسی نے کھانے میں زہر دیا ہے ۔
بعدازاں 27اگست کو شام 6بجے میرےچھوٹے بیٹے8سالہ آرش جمشید چیمہ کی بھی اچانک خراب ہوئی تو اسے بھی حمید لطیف ہسپتال لے گئی،تو ڈاکٹر نے دوبارہ بتایا کہ اسے بھی کھانے میں زہر دیا گیا ہےجس سے اس کے گلے اور جسم میں شدید انفیکیشن پھیل گیا ہے،جو اب زیر علاج ہے ،بعد میں جب میں گھر آئی تو ملازم محمد رمضان اور غلام عباس نے بتایا کہ محمد اقبال خانسامہ اور اقبال ڈرائیور،رانا وقار ڈرائیور اور دولت باز گارڈ باتیں کررہے تھے کہ اب ہمارے وارے نیارے ہیں کہ ہم نے مسرت چیمہ اس کے شوہر جمشید چیمہ اور ان کے بیٹوں آحل اور آرش کو کھانے میں زہر ملا کر دے رہے تھے، جو اب اس دنیا میں نہیں ر ہیں گے ۔ آحل تو کسی وجہ سے بچ گیا لیکن آرش نہیں بچ سکے گا ۔

یہ بھی پڑھیں:  وزارت ہاﺅسنگ کی سرکاری ملازمین کے رینٹل سیلنگ میں اضافہ کی سفارش

اقبال ڈرائیور نے کہا کہ میں نے پہلے بھی 2سے 3 لوگوں کو اسی طرح کک سے مل کر ٹھکانے لگایا ،مسرت چیمہ کے مطابق بچے زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہیں ۔

پولیس نے مسرت چیمہ کی درخواست پر مقدمہ نمبر 792/2021ء درج کر کے خانساماں محمد اقبال، ڈرائیور وقار،سیکیورٹی گارڈ دولت باز اور ڈرائیور اقبال اور محمد رمضان کو حراست میں لے لیا ہے ۔

دونوں بچوں کی حالت تشویشناک تھی ، لیکن اب وہ خطرے سے باہر ہیں ،6 ملازمین کو حراست میں لیا گیا ہے ، آئی جی پنجاب انعام غنی نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور غلام محمود ڈوگر سے واقعہ کی رپورٹ طلب کرلی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں