Zabihullah_afghan

طالبان نے چین سے بہت سی توقعات وابستہ کرلیں

EjazNews

ان کا کہنا تھا کہ چین ہمارا اہم شراکت دار ہے اور افغانستان میں سرمایہ کاری کے لیے تیار ہے۔

اطالوی اخبار لا ریپبلیکا کو انٹرویو دیتے ہوئے ذبیح اللہ مجاہد نے کہا کہ طالبان، معاشی ترقی کے لیے چین کی مدد سے لڑیں گے۔

طالبان ترجمان نے انٹرویو میں کہا کہ چین ہمارا سب سے اہم شراکت دار ہے اور ہمارے لیے بنیادی اور غیر معمولی موقع کی نمائندگی کرتا ہے کیونکہ یہ ہمارے ملک میں سرمایہ کاری اور تعمیر نو کے لیے تیار ہے۔

انہوں نے کہا کہ چین کے نئے سلک روڈ منصوبے کو طالبان کی طرف سے انتہائی عزت کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔

اس انفرا اسٹرکچر منصوبے کے ذریعے چین، تجارتی روٹس کھول کر اپنا عالمی اثر و رسوخ بڑھانا چاہتا ہے۔

ذبیح اللہ مجاہد کا کہنا تھا کہ ملک میں بہترین تانبے کی کانیں ہیں جنہیں چین کی مدد سے جدید اور قابل استعمال بنایا جاسکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  فیصلہ کرلیں کس نے عملی خدمت کی اور کون تقاریر سے وقت ضائع کررہا ہے:میاں شہبازشریف

انہوں نے اس بات کی بھی تصدیق کی کہ مستقبل میں خواتین کو جامعات میں تعلیم حاصل کرنے کی اجازت دی جائے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ خواتین بطور نرسز، پولیس کے محکمے اور وزارتوں میں بطور معاونین کام کرنے کی اہل ہوں گی۔تاہم انہوں نے کسی خاتون کو وزیر بنانے کے امکان کو رد کیا۔

دوسری جانب طالبان کے دوحہ میں سیاسی دفتر کے ترجمان سہیل کا کہنا تھا کہ چین نے افغانستان میں اپنا سفارتخانہ کھلا رکھنے اور جنگ سے متاثرہ ملک کی انسانی امداد بڑھانے کا وعدہ کیا ہے۔

غیر ملکیمیڈیا کے مطابق سہیل شاہین نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا کہ گروپ کے دوحہ میں سیاسی دفتر کے رکن عبدالسلام حنفی نے چین کے نائب وزیر خارجہ وو جیانگ ہاؤ سے ٹیلی فونک گفتگو کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ گفتگو میں چینی نائب وزیر خارجہ نے کہا کہ وہ کابل میں اپنا سفارتخانہ کھلا رکھیں گے، ہمارے تعلقات ماضی کے مقابلے میں مضبوط ہوں گے جبکہ علاقائی سلامتی اور ترقی میں افغانستان اہم کردار ادا کر سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  اقلیتی ہندو برادری کی سمادھی کو نقصان پہنچانے والوں میں سے 14گرفتار،چیف جسٹس کا از خود نوٹس

ترجمان نے کہا کہ چین اپنی انسانی امداد بالخصوص کورونا وائرس کے علاج کے لیے امداد جاری رکھے گا اور اسے بڑھائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں