Amjad_Saqib

ایشیائی باشندوں کی انسانی خدمات کا اعتراف دنیا نے بھی کر لیا

EjazNews

ریمن میگسیسے ایوارڈ 1957 میں قائم کیا گیا تھا تاکہ غریب ممالک میں ترقیاتی شعبے میں کام کرنے والے افراد اور گروپس کو تعظیم دی جا سکے۔
سماجی کارکن 64 سالہ محمد امجد ثاقب اپنی نوعیت کے پہلے بلاسود اور بغیر ضمانت کے مائیکرو فنانس پروگرام کے بانی ہیں جنہوں نے لاکھوں غریب خاندانوں کی مدد کی ہے۔ انہیں بھی اس ایوارڈ سے نوازا گیا ہے۔

ایوارڈ فاؤنڈیشن نے کہا کہ اپنے آغاز کی تقریباً دو دہائیوں کے بعد اخوت پاکستان کا سب سے بڑا مائیکرو فنانس ادارہ بن گیا ہے جس نے 900 ملین ڈالر کے برابر رقم تقسیم کی اور تقریباً 100 فیصد قرض کی ادائیگی کی شرح بھی قائم رکھی۔

امجد ثاقب عبادت گاہوں کو مستحق افراد کو پیسے دینے کے لیے استعمال کرتے ہیں، ان کے متاثر کن یقین کا حوالہ دیا گیا کہ انسانی بھلائی اور یکجہتی غربت کے خاتمے کے طریقے تلاش کریں گی۔

یہ بھی پڑھیں:  مریم نواز کے بیٹے کی لندن کے پر تعیش ہوٹل میں شادی ہو گئی

فلپائن کی 53 سالہ فلپائنی ماہی گیر رابرٹو بیلن کو بھی یہ ایوارڈ دیا گیا جنہوں نے جنوبی جزیرے مینڈاناؤ میں مرنے والی ماہی گیری کی صنعت کو زندہ کرنے میں مدد کی۔

Ramon Magsaysay Award_1
ریمن میگسیسے ایوارڈ 1957 میں قائم کیا گیا تھا تاکہ غریب ممالک میں ترقیاتی شعبے میں کام کرنے والے افراد اور گروپس کو تعظیم دی جا سکے۔

حکومتی مدد کے ساتھ بیلن اور دیگر چھوٹے ماہی گیروں نے 2015 تک 500 ہیکٹر (1،235 ایکڑ) مینگروو جنگلات کو دوبارہ لگایا جس سے ان کی ماہی گیری میں بہتری ہوئی اور ان کا معیار زندگی بلند ہوا۔

ایوارڈ فاؤنڈیشن نے کہا کہ جو کبھی مایوسیوں کا صحرا تھا اب وہ صحت مند مینگروو جنگلات کا بڑا قطعہ ہے جو سمندری اور زمینی زندگی سے مالا مال ہے۔

فلپائن ہی میں قائم این جی او کمیونٹی اور فیملی سروسز انٹرنیشنل کے بانی امریکی اسٹیون منسی کو پناہ گزینوں، قدرتی آفات کے متاثرین کی مدد اور ایشیا میں سابق کمسن فوجیوں کو سکول واپس لانے کی بنیاد پر ایوارڈ دیا گیا۔

انڈونیشیا کی دستاویزی فلمیں بنانے والی کمپنی واچ ڈاک جو انسانی حقوق ، سماجی انصاف اور ماحولیات پر کام کرتی ہے، نے ایک آزاد میڈیا تنظیم کے لیے انتہائی اصولی جدوجہدکی بنیاد پر ایوارڈ حاصل کیا۔

یہ بھی پڑھیں:  22کروڑ میں سے صرف15لاکھ لوگ ٹیکس دیتے ہیں، 7سو ارب کی ٹیکس چوری ہوتی ہے:وزیراعظم عمران خان

بنگلہ دیش کی 70 سالہ فردوسی قادری ریمن میگسیسے ایوارڈحاصل کرنے والے پانچ افراد میں سے ایک ہیں-
یہ ایوارڈ ایک فلپائنی صدر کے نام پر جاری کیا گیا ہے جو ہوائی جہاز کے حادثے میں ہلاک ہو گئے تھے۔ رواں سال ایوارڈ کی یہ تقریب آن لائن منعقد کی گئی۔

فرودسی کو سائنس کے شعبے میں زندگی بھر کی ریاضت اور ویکسین کی تیاری میں انتھک کردار کی بنیاد پر یہ ایوارڈ دیا گیا ہے۔

منیلا میں قائم ایوارڈ فاؤنڈیشن نے ایک بیان میں کہا کہ بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں اسہال کی بیماریوں کی تحقیق کے بین الاقوامی مرکز میں کام کرتے ہوئے فردوسی قادری نے ہیضہ اور ٹائیفائیڈ سے لڑنے کے لیے زیادہ سستی ویکسین بنانے میں کلیدی کردار ادا کیا۔ فاؤنڈیشن نے بنگلہ دیش کی سائنسی تحقیقی صلاحیت کو بڑھانے کے لیے قادری کی کوششوں کا بھی حوالہ دیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں