India_Russia

بھارت امریکہ کی بجائے پھر روس سے اسلحہ خریدنے لگ پڑا

EjazNews

بھارت کے جنگی جنون میں اضافہ ہوگیا ، بھارتی فضائیہ نے روس سے ہنگامی بنیادوں پر70ہزار اے کے۔103ایسالٹ رائفلیں حاصل کرنے کے لئے ایک معاہدے پر دستخط کئے ہیں تاکہ موجودہ انساس رائفل کی جگہ جدید روسی ساختہ رائفل کو متعارف کرایا جائے۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق بھارتی ایئر فورس کو ڈیڑھ لاکھ سے زائد نئی اے کے۔103 رائفلوں کی ضرورت ہے جو اگلے چند مہینوں میں مہیا ہونے کی توقع ہے۔ اس اضافے سے عسکریت پسندوں کے حملوں سے نمٹنے میں اس کے استعداد کار کو بہتربنانے میں مدد ملے گی۔روس سے ہنگامی بنیادوں پر 70ہزار اے کے۔103 ایسالٹ رائفلیں خریدنے کے لئے گزشتہ ہفتے تقریبا 300 کروڑ روپے کے معاہدے پر دستخط کئے گئے۔

سرکاری حکام نے ذرائع ابلاغ کو بتایا کہ یہ رائفل پہلے جموں و کشمیر جیسے جنگ زدہ علاقوں اور حساس فضائی اڈوں پر تعینات فوجیوں کو فراہم کی جائے گی۔ ضرورت کی باقی رائفلیں بھارت اور روس کے درمیان ایک نئے معاہدے پر دستخط کے بعدمہیا کی جائیں گی جس کے تحت ایک نئی جدید رائفل اے کے۔103 بھارت میں مشترکہ طورپر تیا کی جائے گی۔ اے کے۔103 ایسالٹ رائفلوں کے معاہدے پر فوج کام کررہی ہے جس کو اپنے فوجیوں کا فائر پاور بڑھانے کے لئے ساڑھے چھ لاکھ جدیدرائفلوں کی ضرورت ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  بورس جانسن برطانیہ کے نئے وزیراعظم منتخب

دوسری جانب بھارتی وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے انڈین کوسٹ گارڈ (آئی سی جی)جہاز وگرہ کو بحری خدمات میں شامل کیا۔

اس جہاز کا ڈیزائن اور اسے تیار کو لارسن اینڈ ٹوبرو (ایل اینڈ ٹی) شپ بلڈنگ لمیٹڈ نے کیا ہے ۔

بھارتی میڈیا کے مطابق یہ جدید ریڈار سے لیس ہے ۔ یہ دو انجن والے ہیلی کاپٹر اور چار تیز رفتار کشتیوں کو لے جانے کی صلاحیت رکھتا ہے ۔جہاز کی لمبائی 98 میٹر ہے اور اس پر 11 افسران اور 110 دیگر اہلکار تعینات رہیں گے ۔ جہاز 40/60 بوفورس توپ سے لیس ہے اور اس پر فائرنگ کنٹرول سسٹم کے ساتھ میں 12.7 ملی میٹر کی دو فکسڈ ریموٹ کنٹرول گنیں نصب ہیں۔ سمندری بیڑے میں شامل ہونے کے بعد کوسٹ گارڈ کے پاس 157 جہاز اور 66 طیارے ہوں گے۔

اس موقعہ پر راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ دنیا میں بہت تیزی سے تبدیلیاں رونما ہورہی ہیں اور ممالک کے درمیان اقتصادی ، سیاسی اور تجارتی تعلقات مسلسل اتار چڑھا آرہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  قدرتی آفات اور تصادم سے دنیا بھر میں کتنے لوگ بے گھر ہوئے؟

انہوں نے کہا کہ اس کے ساتھ ہی دیگر ملک سے آنے والی آئندہ خبروں کے بارے میں کچھ نہیں کہا جا سکتا۔وزیر دفاع نے کہا آج دنیا تیزی سے بدل رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بحر ہند کا خطہ، جہاں دنیا کے دو تہائی سے زیادہ تیل کی شپ منٹ ہو رہی ہے ، آج کی بدلتی دنیا یقینی طور پر ان شعبوں کو بھی متاثر کرتی ہے ۔ لہذا ہمیں ہر وقت چوکس رہنے کی ضرورت ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں