karachi_school

کراچی میں ویکسینیشن کی شرط پر 30اگست کو سکول کھلیں گے

EjazNews

کراچی میں پرائیویٹ سکولز ایسوسی ایشن کے نمائندوں سے ملاقات کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے صوبائی وزیر سردار علی شاہ کا کہنا تھا کہ ہمیں ہدایات دی گئی تھیں کہ سکول مزید 7 روز بند رکھے جائیں کیونکہ عاشورہ کے بعد کیسز میں اضافے کا امکان تھا، اس لیے ہم نے مستقل حل کی طرف جانے کا سوچا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مستقل حل ویکسی نیشن ہے، پہلے ویکسی نیشن کی شرح سرکاری و نجی سکول میں کم تھی، اب ویکسی نیشن کی شرح بڑھی ہے، جو والدین ویکسین لگوا چکے ہیں ان کے بچے سکول جاسکتے ہیں، کورونا سے جان چھڑانے کا اور کوئی حل نہیں ہے ماسوائے ویکسین کے کیونکہ اس سے ہم کافی حد تک خود کو بچا سکتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمیں مکمل مانیٹرنگ کے بعد رپورٹ حاصل ہوئی ہے کہ نجی اداروں کے تقریباً 80 اساتذہ اور عملہ ویکسین لگوا چکا ہے جس کے بعد میں نے اور وزیر اعلیٰ نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ سکولز جہاں عملے اور اساتذہ کی 100 فیصد ویکسی نیشن مکمل ہو چکی ہے انہیں 30 اگست سے کھول دیا جائے گا، باقی سکولز جیسے ہی ویکسین رپورٹ جمع کروادیں گے انہیں کھولنے کی اجازت دے دی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں:  نجی ہاؤسنگ سوسائٹی(ایڈن) کے سربراہ سپرد خاک،تدفین کے وقت متاثرین کا احتجاجی مظاہرہ

صوبائی وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ تعلیم ایک بہت بڑا محکمہ ہے، سماج کا بہت بڑا حصہ اس سے منسلک ہے، ہم چاہتے ہیں کہ ویکسی نیشن کی شرح بڑھے تاکہ بار بار لاک ڈاون کے مسائل سے بچ سکیں، اس کا ایک ہی حل ہے کہ والدین کو پابند کیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ تمام ایسوسی ایشن کے نمائندگان کے ساتھ آج اجلاس ہوا ہے، ان کے جو مسائل تھے ہم نے سنیں اور انہوں نے ہماری بات پر رضامندی ظاہر کی ہے کہ اسٹیئرنگ کمیٹی کا فیصلہ قائم رہے گا کہ 50 فیصد حاضری کے ساتھ ہفتے کے 6 روز سکول کھلیں گے، تین دن ایک شفٹ ہوگی اور تین دن دوسری شفٹ ہوگی، پی سی آر ٹیسٹ کی سہولت فراہم کی جائے گی تاکہ سکول میں کوئی کیس نہ آئے۔

سردار علی شاہ نے اعلان کیا کہ 30 اگست سے صوبے بھر میں وہ تعلیمی ادارے کھول دیے جائیں گے جن کا 100 عملہ ویکسین لگوا چکا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ای سی سی اجلاس میں اربوں روپےکے کن منصوبوں کی منظوری دی گئی ہے

انہوں نے کہا کہ نجی سکولوں کی جانب سے درخواست کی گئی تھی کہ اساتذہ کو سکول کھولنے سے قبل آنے کی درخواست دی جائے تاکہ تعلیمی سال کی منصوبہ بندی کی جاسکے، جس کے بعد انہیں کل سے ویکسینیٹڈ اسٹاف کو بلانے کی اجازت دی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سرکاری اداروں میں تنخواہ روکنے کی تنبیہ کرنے پر ملازمین میں ویکسی نیشن کا رجحان بڑھا ہے اور 90 فیصد ملازمین ویکسین لگوا چکے ہیں۔
سردار شاہ نے کہا کہ والدین کے شناختی کارڈ نمبر لیے جائیں گے تاکہ چیک کیا جاسکے کہ انہوں نے ویکسین لگوائی ہے یا نہیں، کورونا وائرس سے بچے متاثر ہو رہے ہیں، کل راولپنڈی میں بچوں میں کورونا وائرس کے 12 کیسز سامنے آئے، ہم مستقل حل کی طرف جارہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں