Ranjeet_sing

رنجیت سنگھ کا مجسمہ توڑتے ہوئے نوجوان نعرے لگاتا رہا

EjazNews

ایک نا معلوم نوجوان جو شاہی قلعہ میں سیر و تفریح کے لئے داخل ہوا اور وہاں سے جنگلہ پھلانگ کر رنجیت سنگھ کے مجسمے کے پاس پہنچ گیا اس نے ہتھوڑا پکڑا ہوا تھا اور نعرے لگاتے ہوئے مجسمے کو توڑ دیا ۔

اس موقع پر سکیورٹی پر موجود اہلکار نے نوجوان کو دبوچ لیا اور سکیورٹی کے دیگر اہلکار بھی وہاں پہنچ گئے جنہوں نے پولیس ایمر جنسی سروس پر کال کر کے پولیس کو طلب کر لیا جس نے ملزم کو حراست میں لے کر تھانے منتقل کر دیا ۔

بتایا گیا ہے کہ نوجوان مجسمہ پر حملہ آور ہونے کے دوران لبیک یارسول اللہ کے نعرے بھی لگاتا رہا ۔ تھانہ ٹبی سٹی نے ملزم کے خلاف مختلف دفعات کے مقدمہ درج کر لیا ہے ۔ ملزم کی شناخت محمد رضوان کے نام سے ہوئی ہے جو کٹھیالہ شیخاں منڈی بہائو الدین کا رہائشی بتایاگیاہے ۔

وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے رنجیت سنگھ کے مجسمے کو نقصان پہنچانے کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے ہدایت کی ہے کہ گرفتار ملزم کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کی جائے۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ مجسمے کو دوبارہ اصل حالت میں بحال کیا جائے گا۔چیئر پرسن قائمہ کمیٹی داخلہ مسرت جمشید چیمہ نے کہا کہ پولیس نے ملزم کے خلاف فوری کارروائی کی ہے اور اس کے خلاف مقدمہ بھی درج کر لیا گیا ہے ، ملزم نے جو اقدام اٹھایا ہے اس پر قانون اپنا راستہ بنائے گا ۔

یہ بھی پڑھیں:  لاہور کے وسن پورہ میں مکان کی چھت گرنے سے ایک ہی خاندان کے 6افراد جاں بحق
Ranjeet_sing_1
رنجیت سنگھ کا پتلا نیچے گرا ہوا ہے اور گھوڑا بغیر سوار کے

دستیاب معلومات سے یہ بھی انکشاف ہوا ہے کہ یونسیکو ورلڈ ہیر ٹیج سائٹ شاہی قلعہ میں نصب رنجیت سنگھ کا مجسمہ تیسری بارتوڑ ا گیا۔ 2سال قبل شاہی قلعہ میں واقع حویلی جنداں کے باہر یہ مجسمہ نصب کیا گیا تھا جبکہ ذرائع کا ماننا ہےکہ مجسمہ نصب کرنے کا آئیڈیا یو کے اور یو ایس اے کی کچھ این جی اوز کا تھا جسے پاکستان کےماہر آثار قدیمہ ففیر سیف نے متعارف کروایا تھا۔ تاہم حکومت، والڈ سٹی لاہور اتھارٹی اور محکمہ آثار قدیمہ کی معاونت سے اس مجسمے کو شاہی قلعہ میں نصب کیا گیا تھااور اس سلسلے میں باقاعدہ تقریب بھی منعقد کی گئی تھی۔ تاہم جب سے یہ مجسمہ نصب کیا گیا تھا تنازعات کا شکار ہی رہا تھا۔

مجسمہ نصب ہونے کے ایک ہفتے بعد اسے توڑنے کی کوشش کی گئی تھی جبکہ بعد ازاں اسے ایک مرتبہ پھر توڑا گیا تھا ۔

والڈ سٹی اتھارٹی ذرائع کے مطابق دونوں دفعہ مجسمہ توڑنے والوں کو گرفتار کروایا گیا تھا اور مجسمے کی مرمت کروا دی گئی تھی۔ تاہم گزشتہ روز محمد رضوان نامی شخص شاہی قلعہ میں ہتھوڑا لے کر گھس گیا تھا اور اس نے مجسمے کو توڑ کر رنجیت سنگھ کا سٹیچو نیچے گرا دیا،مجسمہ توڑنے والا شخص سکیورٹی کے انتظامات کے باوجود مجسمے تک کیسے پہنچ گیا ۔

یہ بھی پڑھیں:  چاروں بچیوں کو ساہیوال سے بازیاب کرو الیاگیا ، لمحہ فکریہ ہےکہ بچیاں ساہیوال تک پہنچی کیسے؟

اپنا تبصرہ بھیجیں