Harresment

کیاآپ جانتے ہیں، پچھلے 6ماہ کے دوران پنجاب میں کتنی عورتیں اغواء ہوئیں؟

EjazNews

پنجاب انفارمیشن کمیشن میں پنجاب پولیس کی طرف سے پبلک کئے جانیوالے  کرائم ڈیٹا میں انکشاف ہوا ہے کہ یکم جنوری 2021 سے 30 جون 2021 تک 6 ماہ کے دوران صوبے میں 6 ہزار 954 خواتین اغواء ہوئیں جن میں سب سے زیادہ کیسز لاہور میں ریکارڈ ہوئے جن کی تعداد 1ہزار 609 ہے۔

’’ دستاویزات کے مطابق پچھلے 6ماہ کے دوران پنجاب میں 1 ہزار 890 خواتین ریپ کا شکار ہوئیں۔ لاہور میں سب سے زیادہ 249 خواتین کو زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔

دستاویزات کے مطابق مذکورہ عرصہ میں بچوں کے ساتھ زیادتی کے 752واقعات ہوئے اس میں بھی لاہور میں سب سے زیادہ 116 کیسز سامنے آئے۔

خواتین کے ساتھ تشدد کے 3 ہزار 721 جبکہ غیرت کے نام پر 107 خواتین کو قتل کیا گیا۔ گھریلو تشدد کے 325، کم عمری میں بچوں کی شادیوں کے 17 اور چائلڈ لیبر کے 23 واقعات ہوئے جبکہ پچھلے 6 ماہ کے دوران خواتین کو کام کرنے کی جگہ ہراساں کرنے کا ایک کیس بھی سامنے نہیں آیا۔

یہ بھی پڑھیں:  سوئی گیس کمپنیوں سے عمریں گزرنے کے بعد سپریم کورٹ کے حکم سے ملازمین فارغ کرنے کافیصلہ

عورتوں کے اغواء کے لاہور کے بعد سب سے زیادہ کیس راولپنڈی میں 417، فیصل آباد میں 416، شیخوپورہ میں 323، ملتان میں 302، رحیم یار خان میں 267، بہاولپور میں 256، اوکاڑہ میں 238، گوجرانوالہ 227، سرگودھا 216، مظفرگڑھ 119 اور قصور میں 217 کیسز رپورٹ ہوئے۔

غیرت کے نام پر گزشتہ 6 ماہ میں سب سے زیادہ خواتین رحیم یار خان میں قتل ہوئیں جن کی تعداد 10ہے جس کے بعد فیصل آباد میں 8، سرگودھا 8 اور گوجرانوالہ میں 7 خواتین قتل ہوئیں۔

بچوں کے ساتھ زیادتی کے لاہور کے بعد سب سے زیادہ واقعات گوجرانوالہ میں ہوئے جن کی تعداد 65 ہے جبکہ فیصل آباد میں 41، شیخوپورہ 54، قصور 33، ملتان 47، مظفرگڑھ30، راولپنڈی 32، بہاولنگر 24 اور ننکانہ میں 24 بچوں کو زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں