KPL_action

بھارتی سازشیں ناکام ہو گئیں،کشمیر پریمیئر لیگ امیدوں پر پورا اترنے لگی

EjazNews

تما شائیوں کی بڑی تعدادمیں خوبصورتی سے سجائے نڑول سپورٹس سٹیڈیم مظفرآباد میں امڈ آئی، تماشائیوں میں زبردست جوش و خروش تھا،ٹورنامنٹ کا آغاز رنگارنگ تقریب سے ہوا ، نڑول سٹیڈیم میں افتتاحی تقریب میں پیراگلائیڈنگ کا شاندار مظاہرہ کیا گیا ،پیراشوٹرز کی کرکٹ سٹیڈیم میں شاندارلینڈنگ،افتتاحی تقریب کے بعدمیچ شروع ہو گیا۔

تماشائیوں کی بڑی تعداد مظفرآباد سٹیڈیم میں امڈ آئی،پیراگلائیڈرز کی کرکٹ سٹیڈیم میں شاندار لینڈنگ نے تماشائیوں کے دل موہ لئے، شرکاء نے تالیاں بجا کر پاکستان زندہ باد کے نعرے لگا کر داد دی، تماشائیوں نے قابل دید جوش و خروش کا مظاہرہ کیا ،نڑول سپورٹس سٹیڈیم میں سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئےتھے ، محکمہ سپورٹس،یوم اینڈ کلچر آزادکشمیر کے افسران اور ملازمین انتظامات کو کامیاب بنانے کیلئے متحرک رہے۔

نڑول سٹیڈیم میں داخلے کے لئے شائقین اور وی آئی پیز شرکاء کےلئے خصوصی سکیورٹی پاس جاری کئے گئے۔

نڑول سپورٹس سٹیٖڈیم کو عالمی میعار کے مطابق تیارکیا گیا ہے جس میں نیشنل اور انٹر نیشنل سطح کے میچز کے لیئے موزوں ترین قرار دیا گیا ہے۔تاہم سٹیڈیم میں داخلے کےلئے شائقین اور وی آئی پیز شرکاء کے لیئے خصوصی سکیورٹی پاس جاری کئے گئے۔میچز کے دوران نڑول سٹیڈیم اور محلقہ علاقوں کو انتہائی احساس قرار دیا گیا تھا۔

علاوہ ازیں کھلاڑیوں کی موومنٹ کے دوران سکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کئے گئے ہیں اور سٹیڈیم کو مختلف زون میں تقسیم کیا گیا ہے۔

دوسری جانب انگلینڈ کے تجربہ کار سپنر مونٹی پنیسر نے انکشاف کیا ہےکہ اس نے کشمیر پریمیئر لیگ (کے پی ایل) میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ اس لئے کیا کہ مجھے بورڈ آف کرکٹ کنٹرول انڈیا (بی سی سی آئی) کی جانب سے انگلینڈ کرکٹ بورڈ (ای سی بی) اور یوکے پروفیشنل کرکٹ ایسوسی ایشن (پی سی اے) کے ذریعے ویزا منسوخ کرنے دھمکیاں دی گئی تھیں۔

یہ بھی پڑھیں:  20فرور ی سے شروع ہونے والے پی ایس ایل 6کا شیڈول
کشمیر پریمیئر لیگ کی افتتاحی تقریب میں وزیراعظم آزاد کشمیر کے ہمراہ وفاقی وزراء اور دیگر کا گروپ فوٹو

مونٹی پنیسر نے میرپور رائلز کے اونر راجہ سلیمان رضا کے ساتھ پریس کانفرنس میں ای سی بی اور پی سی اے کے کردار کا انکشاف کیا اور کہا کہ ای سی بی کے حکام نے مجھے مشورہ دیا تھا کہ انہیں کے پی ایل میں شرکت پر بھارت کے ویزے کی منسوخی سمیت سنگین نتائج بھگتنا ہوں گے۔ ویزے کی منسوخی سے انہیں بھارتی پنجاب میں اپنی وسیع تر فیملی کو جوائن کرنے سے محروم ہونا پڑے گا۔

مونٹی نے کہا کہ گزشتہ ہفتے جب کے پی ایل کمپین کا آغاز ہوا تھا تو ای سی بی اور پی سی اے نے مجھے یہ مشورہ دیا تھا اور کئی انٹرنیشنل کھلاڑی نے بھی بی سی سی آئی کی جانب سے بالواسطہ اور بلاواسطہ بلیک میل کرنے کی شکایت کی۔

انہوں نے کہا کہ بی سی سی آئی کے کسی فرد نے مجھ سے ڈائریکٹ رابطہ نہیں کیا لیکن مجھے بتایا گیا کہ ای سی بی اور پی سی اے کو بھارتی کرکٹ حکام کی جانب سے میرے ویزے کی منسوخی کا دھمکی آمیز پیغام پہنچایا گیا ہے۔

مظفر آباد سٹیڈیم کا خوبصورت منظر

پنیسر نے کہا کہ مجھے یہ جان کر حیرت ہوئی کہ مجھے بھی ڈرافٹ میں منتخب کیا گیا ہے اور میں کشمیر میں کرکٹ کھیلنا چاہتا تھا لیکن اس کے نتائج کے حوالے میں مشورہ دیئے جانے کے بعد میں نے نہ کھیلنے کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ میرے معمر گرینڈ پیرنٹس بھارت میں رہتے ہیں۔ گرینڈ مدر نابینا ہے اور گرینڈ فادر کی عمر 90 سال سے زائد ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  بابراعظم کا نہ ہونا ایسے ہی ہے جیسے نیوزی لینڈ کے پاس کین ولیمسن کا نہ ہونا ہے:مصباح الحق

ای سی بی اور پی سی اے نے مجھے کہا کہ تمہیں بھارت کا ویزا نہیں ملے گا اور تم اپنی فیملی اور فرینڈز سے ملاقاتیں نہیں کر سکو گے۔ میرا خاندان میرے لئے پہلے ہے، اس لئے میں نے اپنی کرکٹ کھیلنے کی خواہش کو پس پشت ڈال دیا اور خود سے معذرت کر لی۔

انہوں نے کہا کہ ڈراپ آئوٹ کا فیصلہ میرا تھا اور مجھے فیصلے پر مجبور نہیں کیا گیا، تاہم انہوں نے بھارتی کرکٹ حکام کی جانب سے اپنے اور دیگر انٹرنیشنل کھلاڑیوں کے خلاف جذباتی بلیک میلنگ اور طویل مدتی نتائج کے منصوبے کے بارے میں بات کی۔

مونٹی نے کہا کہ میں یہ نہیں جانتا کہ بی سی سی آئی اور ای سی بی کے حکام میں بات چیت کی حقیقت کے بارے میں نہیں جانتا لیکن مجھے یقین ہے کہ ای سی بی نے مجھے یہ مشورہ دیا جب بی سی سی آئی نے ای سی بی کے ذریعے یو کے بیسڈ کھلاڑیوں کو وارننگ جاری کی۔
انہوں نے کہا کہ کئی انٹرنیشنل کھلاڑی کے پی ایل میں حصہ لے رہے ہیں، کیونکہ انکی فیملی بھارت میں نہیں رہتی اور وہ بھارتی ویزے کی پروا نہیں کرتے لیکن میرا کیس ان سے مکمل طور پر مختلف ہے۔

کشمیر پریمیئر لیگ کی خوبصورت ٹرافی

انہوں نے امید ظاہر کی کہ میرے مداح میرے فیصلے کی وجہ کو سمجھیں گے۔ کے پی ایل میں شرکت پر مجھے بھاری قیمت چکانا پڑتی کیونکہ بھارت میرا ویزا منسوخ کر دیتا اور میں اپنی فیملی سے نہیں مل پاتا، میرا ہیریٹیج بھارت میں ہے۔ بھارت میں میری اور میری فیملی کی مضبوط جڑیں ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  انگلینڈسیریز کے کھلاڑی شارٹ لسٹ ہو گئے

انہوں نے کہا کہ مجھے کشمیر میں کرکٹ کھیلنے اور بھارت کا دورہ کرنے کے قابل ہونے میں سے فیصلہ کرنا تھا اور میں نے اپنے لئے بہترین آپشن کا چوائس کیا کہ مستقبل میں کسی مشکل میں نہ پھنسوں۔ میرپور رائلز کے اونر راجہ سلیمان رضا نے افسوس کا اظہار کیا کہ بی سی سی آئی نے کر کٹ کے کھیل کو بھی سیاست کی بھینٹ چڑھا دیا ہے اور کرکٹ کے ذریعے کشمیریوں کے ساتھ مشغول ہونے کا ایک بہت بڑا موقع ضائع کیا۔

انہوں نے کہا کہ بھارت کے عوام اس کھیل سے لطف اندوز ہونا چاہتے تھے لیکن بھارتی حکومت نے انہیں محروم رکھنے کیلئے بدقسمتی سے ایک جارحانہ لائن اختیار کی۔ سلیمان رضا نے کہا کہ مونٹی کی کہانی نے ثابت کیا کہ بھارت نے کے پی ایل میں حصہ لینے سے روکنے کیلئے کھلاڑیوں کو دھمکیاں دیں اور بلیک میل کیا۔

سلیمان رضا نے کہا کہ جب میں نے یہ انکشاف کیا کہ میں نے کے پی ایل کیلئے میرپور رائلز کو خرید لیا ہے تو سیکڑوں بھارتی مداحوں نے مجھ تک رسائی کی اور میچوں اور شیڈول کے بارے میں سوالات پوچھے۔ بین الاقوامی کھلاڑیوں کی شرکت کی وجہ سے وہ اس کھیل کو دیکھنے کیلئے بہت بے تاب تھے۔

انہوں نے کہا کہ کے پی ایل کسی بھی قیمت پر آگے بڑھے گی۔ اس سال اور ہمیشہ کیلئے۔ ہم نے یہ عہد کیا ہے کہ ہم کشمیر میں نوجوانوں کیلئے مواقع کی کھڑکیاں کھولنے کے سلسلے کھیلوں کو فروغ دیں گے اور ہم اس پر ثابت قدم رہیں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں