state_bank

اسٹیٹ بینک نے بینکوں کو کیا ہدایات کی ہیں، جس پر پنلٹی کا بھی کہہ دیا ہے

EjazNews

اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے29 جولائی کو تمام کمرشل بینکوں کے صدور کے ساتھ وڈیو میٹنگ میں ہدایات جاری کردی ہیں کہ وہ موٹر گاڑیوں کی خریداری اور گھروں کی تعمیر کیلئے سستے قرضوں کی فراہمی یقینی بنائیں اس کیلئے گورنر اسٹیٹ بینک آف پاکستان باقر رضا نے کمرشل بینکوں کے ہر صدر کو 30 جون 2022 تک قرضے دینے کا ٹارگٹ بھی دے دیا ہے جسے پورا نہ کرنے والے کمرشل بینک کو سٹیٹ بینک آف پاکستان قواعد کے مطابق پنلٹی بھی لگائے گا۔

29 جولائی 2021 کی بینک صدور کے ساتھ آن لائن میٹنگ میں گورنر سٹیٹ بینک آف پاکستان نے کمرشل بینکوں کے صدور سے کہا کہ ہائوسنگ سیکٹر کو دیئے گئے کمرشل بینکوں کے قرضوں کے نتیجے میں سیمنٹ، سریئے، سرامکس شیشہ، سینیٹری فٹنگز، سرامکس، ٹائیلوں، بجلی کے کیبل دوسرے برقی سامان بشمول پنکھوں، اے سی وغیرہ کے کارخانوں سمیت 40 سے زائد صنعتیں فروغ پائیں گی۔ ہزاروں نہیں لاکھوں بیروزگاروں کو روزگار ملے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  کانسٹیبل جمیل کلہوڑوکو 23مارچ کو اعزاز دیاجائے گا

سٹیٹ بینک آف پاکستان نے وڈیو لنک میٹنگ میں بینکوں کے صدور کو کہا کہ کنزیومر فنانسنگ کم سے کم شرح سود پر مہیا کریں اس کیلئے ہائوسنگ سیکٹر کو 5 فیصد اور بزنس کیلئے 7 فیصد شرح سود کی حد مقرر کی گئی ہے جبکہ اسٹیٹ بینک آف پاکستان قومی بچت اسکیموں وغیرہ سے سالانہ کھربوں روپے جو اکٹھے ہوتے ہیں وہ رقم کمرشل بینکوں کو دو سے پانچ فیصد شرح سود پر بطور قرض فراہم کرے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں