Beautiful_Pakistan

بلوچستان کے ساحلی شہر میں لاک ڈائون لگا دیا گیا

EjazNews

بلوچستان حکومت کی جانب سے جاری ہونے والے نوٹی فکیشن میں کہا گیا کہ لاک ڈاؤن کا نفاذ مکران اور خاص طور پر ساحلی شہر گوادر کے مختلف علاقوں میں تیزی سے کووڈ-19 کیسز میں تیزی سے اضافے کے بعد کیا گیا ہے۔

اعلامیے میں کہا گیا کہ مذکورہ اضلاع میں بنیادی ضرورت کی اشیا کی چند دکانوں کے علاوہ تمام دکانیں، ہوٹل اور ریسٹورنٹس 15 روز کے لیے بند رہیں گے۔

نوٹی فکیشن کے مطابق جن لوگوں نے ویکسین لگوائی ہو اور کورونا وائرس کی ایس او پیز پر عمل درآمد کررہے ہوں ان افراد کو دکانوں پر جانے کی اجازت ہوگی۔

نوٹی فکیشن میں مزید کہا گیا کہ تمام مچھلی بازار بند رہیں گے اور جن مچھیروں نے ویکسین لگوائی ہو انہیں سمندر میں مچھلی کے شکار کی اجازت ہوگی۔

مذکورہ اضلاع میں بھارتی طرز کے ڈیلٹا کے پھیلاؤ کے باعث سیاحوں اور تبلغی جماعت کے اراکین کے داخلے پر بھی فوری طور پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ملٹی نیشنل برانڈکے گھی اور آئل کی قیمتوں میں مزید اضافہ

مذکورہ اضلاع میں تمام پارکس اور کھیلوں کے میدان بند رہیں گے جبکہ ساحلی شہر اور مکران ڈویژن کے ضلع کیچ میں سیاسی اور مذہبی اجتماعات پر بھی پابندی عائد کی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق پسنی کی انتظامیہ نے بھی ساحلی قصبے میں لاک ڈاؤن نافذ کر دیا ہے اور شہریوں کو غیر ضروری آمدورفت سے گریز کرنے کی ہدایت کی ہے۔

ڈپٹی کمشنر گوادر میجر (ریٹائرڈ) عبدالکبیر خان زرکون کی زیر صدارت اجلاس ہوا، جس میں کورونا وائرس سے متعلق تمام تر حالات کا جائزہ لیا گیا اور کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز پر تشویش کا اظہار کیا گیا۔

محکمہ صحت کے عہدیداروں کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کے کم و بیش 63 نئے کیسز رپورٹ ہوئے جس کے بعد بلوچستان میں کورونا سے متاثر مریضوں کی مجموعی تعداد 29 ہزار 41 ہوگئی ہے۔

صوبے بھر میں مزید ایک مریض کے انتقال کے بعد عالمی وبا سے جان کی بازی ہار جانے والے مریضوں کی مجموعی تعداد 322 سے تجاوز کرچکی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی

بلوچستان ہائی کورٹ کے چیف جسٹس جمال خان مندوخیل نے مکران ڈویژن میں کورونا کیسز کے پھیلاؤ پر نوٹس لیتے ہوئے، صوبائی سیکریٹری صحت کو ہدایت کر دی کہ حالات کو بگڑنے سے روکنے کے لیے ہر ممکن اقدامات کریں۔

انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت فوری طور پر اضافی کورونا ٹیسٹ کٹس اور ادویات کی فراہمی یقینی بنائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں