abid shar ali

لندن میں عابد شیر علی اور شاہد خان کے درمیان کیا ہواتھا؟

EjazNews

لندن میں ایک ترکش ریسٹورنٹ میں سابق وزیر عابد شیر علی اور شاہد خان کے درمیان گالم گلوچ کی ویڈیوز عید پر منظر عام پر آئیں۔ اس قسم کی ویڈیوز جس میں باقاعدہ ایک دوسرے کی ماں بہن کو گالیاں دی جارہی ہوں کم ہی دیکھنے کو ملتی ہیں۔پہلے پہل سوشل میڈیا پر ویڈیو کے تین حصے اپ لوڈ ہوئےجو کہ دیکھتے ہی دیکھتے لاکھوں لوگوں نے دیکھ لیے۔ ایک میں عابد شیر علی ، شاہد خان کو گالیاں دے رہے تھےاور دوسری میں شاہد خان عابد شیر علی کو گالیاں دے رہے تھے اور تیسری ویڈیو میں شاہد خان کے بیٹے کا بیان تھا، جس نےاس سارے معاملے میں اپنا موقف سامنے رکھا۔

اس کے بعد عابد شیر علی نے بھی اپنی ویڈیو جاری کی، جس میں اس واقعہ کے بارے میں اپنے موقف کی وضاحت کی گئی۔

ویڈیو میں شاہد خان کے بیٹے کا بیان لیا گیا تھا، جو جائے وقوعہ پر موجود تھا اور ویڈیو میں نظر آ رہا تھا، اس میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ عابد شیر علی نے گاہکوں کو نظرانداز کرتے ہوئے اپنے کنبے کے ساتھ قطار میں آگے جانے کے لئے چھلانگ لگائی جبکہ ترکش’’گوکیزو ریسٹورنٹ‘‘ نے کہا ہے کہ عابد شیر علی نے 13 افراد کے لئے 20 جولائی کو 20:30 بجے تصدیق شدہ ریزرویشن حاصل کی تھی۔ عابد شیر علی نے بھی میڈیا کو ریسٹورنٹ ریزرویشن کی تفصیلات جاری کیں۔

یہ بھی پڑھیں:  اس ہفتے سے 6ہزار اور اگلے ہفتے سے7 ہزار پاکستانی بیرون ملک سے پاکستان آسکیں گے:معید یوسف معاون خصوصی وزیراعظم

عمر بٹ نے میڈیا کو بتایا کہ شاہد خان پر عابد شیر علی نے اس وقت حملہ کیا جب وہ ٹیبل کے برابر سے گزر رہے تھے۔ بعد ازاں میڈیا کو ایک ویڈیو جاری کی گئی جس میں شاہد خان کے بیٹے نے بتایا کہ اس کی والدہ اور والد عابد شیر علی کے پاس گئے اور ٹیبل حاصل کرنے کے لئے قطار توڑنے پر ان سے سوال کیا۔ بیٹے نے کہا کہ میری والدہ نے عابد شیر علی سے کہا کہ یہ برطانیہ ہے، پاکستان نہیں، جہاں آپ شاہی خاندان کی طرح قطار توڑ لیتے ہیں۔ یوکے میں سب برابر ہیں۔ میری والدہ اس حقیقت کو سامنے لائیں کہ آپ پاکستانی عوام کے پیسوں سے کھا رہے ہیں۔ عابد شیر علی اور ایک عورت نے میری والدہ اور والد کو گالیاں دینا شروع کیں۔ آخر کار ویٹر نے ہمیں الگ کردیا اور ہمیں ریسٹورنٹ چھوڑنا پڑا۔

یاد رہے،دونوں جانب سے یہ بیان جاری کیا گیا ہے کہ ریستورنٹ کے ویٹر نے کالر سے پکڑ کر انہیں باہر نکالا۔

یہ بھی پڑھیں:  وائرس کے آنے کے 10روز میں ہی سینی ٹائزر کی قلت کا سامنا تھا ، آج وافر موجود ہے: فواد چوہدری

اپنے بیان میں عابد شیر علی نے ریزرویشن بکنگ دکھاتے ہوئے کہا کہ ریستوراں میں ایک شخص تھا، جس نے اپنی بیوی کو ہم پر حملہ کرنے کے لئے استعمال کیا۔ بیٹے نے اپنی والدہ کو بھی آگے بڑھا کر منظر کی فلم بندی کی اور انہیں ایک پلے کارڈ دے کر ہم سے لڑائی کا ایک منظر بنانے کے لئے استعمال کیا۔ خاتون نے مجھے گالیاں دینا شروع کیں اور اس کا شوہر بھی اس میں شامل ہوگیا۔ وہ پی ٹی آئی سے تھے اور ایسے کام کرنا ان کی روایت ہے۔ وہ ویڈیو وائرل کرنا چاہتے تھے لیکن میں نے جیسے کو تیسے کی طرح جواب دیا۔ ریستوراں انتظامیہ نے انہیں باہر نکال دیا۔ میں پی ٹی آئی والوں کو متنبہ کرتا ہوں کہ یہ صرف ٹریلر تھا۔ ہمارے پاس زبردستی جواب دینے کا حق محفوظ ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں