Mumtaz_bhutto

ممتاز بھٹو انتقال کر گئے

EjazNews

ممتاز بھٹو سابق وزيراعظم ذوالفقار علی بھٹو کے کزن اور قریبی ساتھی تھے۔وہ پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے اولین قائدین میں سے ایک ہیں، ممتاز بھٹو وفاقی وزیر، گورنر سندھ اور وزیراعلیٰ کے عہدے پر بھی فائز رہے۔

وہ سندھ کے آٹھویں گورنر تھے، مارچ 1977 میں انہوں نے قومی اسمبلی کی نشست پر کامیاب ہونے کے بعد وہ وفاقی وزیر بنے تھے۔

جنرل ضیا کے دور میں جلا وطنی کے بعد ممتاز بھٹو نے 1985 میں سندھی بلوچ پشتون فرنٹ کے نام سے لندن میں سیاسی اتحاد بنانے کا اعلان کیا تھا اور بعدازاں 1989 میں حیدرآباد میں سندھ نیشنل فرنٹ کے نام سے نئی جماعت بنانے کا اعلان کیا تھا۔

وہ کچھ عرصے سے علیل تھے۔ ممتاز بھٹو کا انتقال کراچی میں ان کی رہائش گاہ پر ہوا۔ ممتاز بھٹو کی میت ان کے آبائی علاقے لاڑکانہ منتقل کی جارہی ہے جہاں بعدازاں ان کی تدفین کی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں:  حکومت بیرون ملک سے 530ملین روپے کی غیر قانونی دولت ریکور کرنے میں کامیاب

وزیراعظم عمران خان سمیت مختلف سیاسی رہنماؤں نے ممتاز علی بھٹو کے انتقال پر اظہارِ تعزیت کیا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کی گئی ٹوئٹ میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ سردار ممتاز علی بھٹو کے انتقال پر افسوس ہوا، اس غم میں ان کے اہلخانہ کے ساتھ شریک ہیں ۔

اپوزیشن لیڈر سندھ اسمبلی حلیم عادل شیخ نے ممتاز علی بھٹو کے انتقال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان کے انتقال کی خبر سن کر دلی افسوس ہوا۔

حلیم عادل شیخ نے کہا کہ ممتاز علی بھٹو سندھ کی سیاست کا اہم کردار تھے، انہوں نے اپنے ادوار میں سندھ کے عوام کی خدمت کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں