whatsapp_web

واٹس ایپ صارفین کے اکاونٹس کیسے ہیک کیے جا رہے ہیں؟

EjazNews

صارفین کو ایک بین الاقوامی موبائل نمبر سے واٹس ایپ پر میسج موصول ہوتا ہے جس میں صارف کو کہا جاتا ہے کہ واٹس ایپ کے خودکار نظام کے تحت یہ پیغام بھیجا جارہا ہے، اگر آپ کو یہ پیغام موصول ہوا ہے تو آپ کا اکاونٹ مشکوک ہے، اپنے اکاونٹ کی تصدیق کے لیے ایس ایم ایس میں موصول ہونے والا تصدیقی کوڈ فراہم کریں۔

پیغام میں صارف کو یہ بھی کہا جاتا ہے کہ اگر آپ نے اس پیغام کو نظر انداز کیا تو آپ کا واٹس ایپ اکاونٹ فوری طور پر بلاک کر دیا جائے گا۔

ایف آئی اے حکام کے مطابق موصول ہونے والی شکایات میں متعدد افراد نے تصدیقی کوڈ شیئر کرنے کے بعد اکاونٹ ہیک ہونے کی شکایت کی ہے جس میں ڈیٹا چوری ہونے کے ساتھ ساتھ مالی طور پر بھی نقصان پہنچنے کی شکایات سامنے آئی ہیں۔

پی ٹی اے حکام کے مطابق حالیہ دنوں میں پیش آنے والے واقعات میں صارفین سے دھوکہ دہی سے موبائل پر موصول ہونے والا پن کوڈ حاصل کیا جاتا ہے جس کے بعد صارف اپنے موبائل سے لاگ آوٹ ہو جاتا ہے اور اکاونٹ ہیکرز کے ہاتھ لگ جاتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  تین دفعہ کی ورلڈ ریکارڈ ہولڈر نے اپنے بال کٹوا دئیے

صارفین اکاونٹ ہیک ہونے سے کیسے بچائیں؟

پی ٹی اے حکام کے مطابق واٹس ایپ اکاونٹ اس وقت تک ہیک نہیں کیا جا سکتا جب تک صارف سے دھوکہ دہی کے ذریعے تصدیقی کوڈ حاصل نہ کیا جائے۔

 ایسے پیغامات موصول ہونے کی صورت میں صارفین پی ٹی اے کے علاوہ براہ راست واٹس ایپ انتظامیہ کو بھی شکایات بھیجیں۔

صارفین واٹس ایپ اکاونٹ محفوظ بنانے کے لیے ٹو سٹیپ ویریفیکیشن آن رکھیں تاکہ کسی اور موبائل میں واٹس ایپ انسٹال کرنے سے بچا جا سکے۔

واٹس ایپ کی سکیورٹی اینڈ پرائیویسی پالیسی کے مطابق اکاونٹ کسی اور کے ہاتھ لگ جانے کی صورت میں فوری طور پر دوبارہ واٹس ایپ لاگ ان کریں، اگر ہیکر نے ٹو سٹپ ویریفیکشن آن بھی کر لی ہے تو سات روز انتظار کرنے کے بعد دوبارہ لاگ ان کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں