climate change

آئی ایم ایف موسمیاتی تبدیلیوں سے متعلق کس خطرے سے ڈرا رہی ہے؟

EjazNews

آئی ایم ایف نے کہا ہے کہ موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے عالمی معیشت کو بڑے خطرات کا سامنا ہے،درست حکمت عملی بین الاقوامی معیشت کے مسائل کو کم کرسکتی ہے، کاربن کی قیمتوں میں اضافہ سے انرجی مکس کی شرح میں بہتری، نئی ایجادات کی ترجیحات میں تبدیلی اور گرین ٹیکنالوجیز کو فروغ دیا جاسکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  بھارت انسانی ہڈیو ں کی سمگلنگ کا سب سے بڑا مرکز

اپنی رپورٹ میں آئی ایم ایف نے کہا ہے کہ 2030 تک بین الاقوامی درجہ حرارت میں اضافہ کی شرح کو 2 ڈگری سینٹی گریڈ سے کم رکھنے کیلئے عالمی سطح پر کاربن کی قیمتوں میں اضافہ کی مربوط حکمت عملی کی ضرورت ہے، موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے عالمی معیشت کو بڑے خطرات کا سامنا ہے لہٰذا موسمیاتی تبدیلیوں کے حوالے سے درست حکمت عملی بین الاقوامی معیشت کے مسائل کو کم کرسکتی ہے اور اس سے سرمایہ کاری کے نئے مواقع پیدا کرنے کے علاوہ معاشی ترقی اور گرین جابز کی فراہمی کے وسیع مواقع بھی پیدا کئے جاسکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  اگر ایران جنگ چاہتا ہے تو اس کا خاتمہ ہو جائے گا: امریکی صدر

آئی ایم ایف نے مزید کہا ہے کہ آلودگی میں اضافہ کرنے والے توانائی کے وسائل کی قیمتوں میں اضافہ جب کہ شفاف وسائل سے حاصل توانائی کی پیداوار کے فروغ کیلئے مراعات کی ضرورت ہے، کاربن کی قیمتوں میں اضافہ سے انرجی مکس کی شرح میں بہتری، نئی ایجادات کی ترجیحات میں تبدیلی اور گرین ٹیکنالوجیز کو فروغ دیا جاسکتا ہے، آئی ایم ایف کا مزید کہناہے کہ 2030 تک موسمیاتی تبدیلیوں کی درست پالیسی اور کاربن کی قیمتوں کو 75 ڈالر فی ٹن تک بڑھا کر مطلوبہ نتائج حاصل کئے جاسکتے ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں