sheikh_rasheed_civil

اعلیٰ سول اور عسکری قیادت افغان حکومت اور طالبان دونوں کو ایک میز پر لانے کی کوشش کر رہی ہے:شیخ رشید

EjazNews

شیخ رشید احمد نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کی سربراہی میں حکمراں جماعت پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) اپنی مدت پوری کرے گی اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور ان کے امریکہ سے متعلق بیانات کا ان کے دور اقتدار پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔

انہوں نے حکومت اور اپوزیشن کے مابین تعلقات میں بہتری سے متعلق بیان کی تفصیلات نہیں بتائیں لیکن خیال کیا جارہا ہے کہ وہ آزاد جموں و کشمیر میں جاری انتخابی مہم کے دوران دونوں فریقین کے مابین لفظی جنگ کو کم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

حکومت مخالف اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے متعلق تبصرہ کرتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ پی ڈی ایم ایک مردہ گھوڑا ہے اور وہ لوگوں کی توجہ حاصل کرنے میں ناکام رہا۔

شیخ رشید نے کہا کہ حزب اختلاف نے وزیر اعظم عمران خان کو کوئی چیلنج نہیں دیا کیونکہ وہ ملک کی خوشحالی کے لیے کام کر رہے ہیں اور اپنی مدت پوری کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں:  کرونا وائرس نے اولمپکس کو بھی مشکوک کر دیا

انہوں نے مزید کہا کہ حکومت شہریوں کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کے لیے کوشاں ہے۔

شیخ رشید نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے مناسب انداز میں قوم کے سامنے مسئلہ کشمیر کو اٹھایا، ان سے پہلے کسی نے بھی اس مسئلے کو اتنی طاقت سے اجاگر نہیں کیا تھا۔

وزیر داخلہ نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ پاکستان، مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کی بحالی تک بھارت سے مذاکرات نہیں کرے گا۔

افغانستان کی صورتحال پر وزیر داخلہ نے کہا کہ پاکستان کسی بھی ملک کو اپنی سرزمین کو علاقائی امن کو خراب کرنے کے لیے استعمال کرنے کی اجازت نہیں دے گا۔

انہوں نے زور دیا کہ اسلام آباد، افغانستان میں امن کا خواہاں ہے اور اپنے ملک کے مستقبل کے بارے میں اپنے عوام کی جانب سے کسی بھی فیصلے کو قبول کرے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ اعلیٰ سول اور عسکری قیادت ہمسایہ ملک میں پائیدار امن کو یقینی بنانے کے لیے افغان حکومت اور طالبان دونوں کو ایک میز پر لانے کی کوشش کر رہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  پاکستان مشکل وقت سے نکل کر آگے بڑھ رہا ہے اور کوئی طاقت اس کو آگے بڑھنے سے نہیں روک سکتی:وزیراعظم عمران خان

شیخ رشید نے مزید کہا کہ اس ضمن میں وزیر اعظم عمران خان، چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ اور دفتر خارجہ کوشش کر رہے ہیں۔

طورخم میں پھنسے ہوئے لوگوں کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ صرف وہی لوگ جن کی ویکسی نیشن ہوچکی ہے، انہیں سرحد عبور کرنے کی اجازت ہوگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں