sira bano

دلیپ کمار اور سائرہ بانو کی شادی کیسے ہوئی؟

EjazNews

دلیپ کمار اور سائرہ بانو کا ساتھ تقریبا 55 سال تک رہا مگر موت نے دلیپ کمار کو اپنی اہلیہ سے الگ کردیا، ان دونوں کو زندگی کی مشکلات اور زمانے کی تلخیاں کبھی الگ نہ کر پائیں بلکہ ان کی محبت نے بڑے بڑے تجزیہ نگاروں کے تجزئیے بھی غلط ثابت کیے۔

دونوں کی محبت کی کہانی اس وقت شروع ہوئی تھی جب کہ سائرہ بانو ابھی زندگی کے داو پیچ کو درست انداز میں سمجھنے کے قابل بھی نہ تھیں اور دلیپ کمار کیریئر کے عروج پر تھے۔

دونوں نے کی شادی سے قبل ان کے درمیان محبت کا آغاز ہوا اور چند ہی سال میں دونوں رشتہ ازداج سے منسلک ہوگئے۔

کامنی، کاشل اور مدھو بالا جیسی خوبرو اداکاراوں کے ساتھ سکرین پر رومانس کرنے والے دلیپ کمار 1960 میں اس وقت سائرہ بانو کی ذلفوں کے اسیر ہوئے جب وہ محض 17 برس کی بالی عمر میں تھیں۔دلیپ کمار کی زندگی کا اہم حصہ بننے سے قبل ہی سائرہ بانو ان کی مداح تھیں اور انہیں دیکھنے اور ان سے ملنے کی غرض سے ہی ایک دن وہ دلیپ کمار کی فلم مغل اعظم کا پریمیئر دیکھنے پہنچیں مگردلیپ کمار پریمیئر میں شریک نہ ہوسکے اور سائرہ بانو ان سے نہ مل سکیں۔سائرہ بانو اس دور کی مقبول اداکارہ نسیم بانو کی بیٹی تھیں اور اسی وجہ سے ہی انہیں فلمی دنیا میں انٹری دینے میں آسانی ہوئی اور ایک سال بعد وہ بھی گلیمر کی دنیا کا حصہ بنیں اور پھر ان کے تعلقات دلیپ کمار سے بھی استوار ہونے لگے۔

یہ بھی پڑھیں:  کوک سٹوڈیو :عاطف اسلم کی آواز میں اسماء الحسنیٰ سما بندھ گیا
madho bala
دلیپ کمار اور سائرہ بانو کی ذاتی زندگی اس وقت مشکلات سے دوچار ہی تھیں کہ اچانک دونوں میں محبت کا احساس اٹھا اور پھر کچھ ہی عرصے میں دونوں ایک ہوگئے اور شہنشاہ جذبات کے مرتے دم تک دونوں ایک ہی رہے۔

سائرہ بانو نے فلمی کیریئر کے آغاز میں ہی شمی کپور، بسواجیت، جوائے مکھرجی، راجندر کمار اور خود دلیپ کمار جیسے اداکاروں کے ساتھ کام کیا، تاہم سائرہ بانو کو شادی کے لیے ابتدائی طور پر راجندر کمار پسند آئے لیکن راجندر کا شادی شدہ ہونا اس تعلق کو ختم کرنے کا باعث بنا۔

اسی طرح کیریئر کی بلندیوں کو چھونے والے دلیپ کمار کی بھی ذاتی زندگی کافی مشکلات کا شکار تھی کیوں کہ مغل اعظم کی ریلیز کے وقت ان کا اداکارہ مدھو بالا کے ساتھ رشتہ ختم ہوا تھا اور اس سے قبل انہوں نے اداکارہ کامنی کاشل سے بھی ان کے اختلافات ہوئے تھے۔

دلیپ کمار اور سائرہ بانو کی ذاتی زندگی اس وقت مشکلات سے دوچار ہی تھیں کہ اچانک دونوں میں محبت کا احساس اٹھا اور پھر کچھ ہی عرصے میں دونوں ایک ہوگئے اور شہنشاہ جذبات کے مرتے دم تک دونوں ایک ہی رہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ماہرہ خان پہلی جنرل خاتون کے روپ میں

کہا جاتا ہے کہ سائرہ بانو کی والدہ نسیم بانو نے دراصل دلیپ کمار کو کہا تھا کہ وہ ان کی بیٹی کو سمجھائیں کہ وہ شادی شدہ ہیرو راجندر کمار کے عشق سے نکلیں اور اسی منصوبے پر کام کرنے کے دوران ہی مغل اعظم کے شہزادہ سلیم خوبرو سائرہ بانو کی زلفوں کے اسیر بن بیٹھے۔

جب سائرہ بانو اور دلیپ کمار کے درمیان محبت کے جذبات جاگے تب تک شہنشاہ جذبات زندگی کی چار دہائیاں گزار چکے تھے جب کہ سائرہ بانو ابھی جوانی کے خماروں میں تھیں مگر دونوں نے عمر اور کیریئر کے فرق کو دیکھے بغیر ایک ہونے کا فیصلہ کیا، جس پر اس وقت کے بولی وڈ پنڈت بھی حیران رہ گئے۔

دونوں نے چند سال تعلقات میں گزارنے کے بعد 11 اکتوبر 1966 کو شادی کی، اس وقت دلیپ کمار 44 سال جب کہ سائرہ بانو صرف 22 سال کی تھیں۔

اس دوران کئی لوگوں نے ان کی عمر کا فرق دیکھ کر کہا تھا کہ یہ شادی طویل عرصے تک جاری نہیں رہ پائے گی تاہم 57 سال مکمل ہونے کے باوجود یہ دونوں اداکار ایک ساتھ رہے اور ہر اچھے و برے وقت میں ایک دوسرے کا ساتھ دیا مگر 7 جولائی 2021 کو موت نے دلیپ کمار کو سائرہ بانو سے الگ کردیا۔

یہ بھی پڑھیں:  2019ء کے دو متاثر کن ڈرامے

شادی کے بعد اگرچہ سائرہ بانو نے کچھ عرصے تک فلموں میں کام کیا، تاہم انہوں نے 1975 میں باضابطہ طور پر فلموں سے علیحدگی اختیار کرکے گھریلو خاتون کے طور پر زندگی گزارنے کا فیصلہ کیا۔

kamli koshaf
 کامنی کاشل سے بھی ان کے اختلافات ہوئے تھے۔

اگرچہ سائرہ بانو اور دلیپ کمار کی شادی کو مثالی شادی قرار دیا جاتا ہے، تاہم بد قسمتی سے ان کے ہاں اولاد نہیں ہوئی، جس کا دونوں کو افسوس بھی رہا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں