Tittok_vs_youtube

ٹک ٹاک کو یوٹیوب اور ٹرلر سمیت دیگر حریفوں کا بھی سامنا ہے

EjazNews

ٹک ٹک کی جانب سے کیے جانے والے اعلان سے دنیا بھر میں تقریباً ایک ارب صارفین کو فائدہ پہنچے گا۔ ٹک ٹاک کے ایک ارب صارفین میں سے صرف 10 کروڑ کا تعلق امریکہ سے ہے۔

 ٹاک ٹاک کے پروڈکٹ مینیجر ڈریو کرچوف کا کہنا ہے کہ طویل ویڈیوز کے ذریعے ٹک ٹاکرز کو اس پلیٹ فارم پر بہتر مواد بنانے کا موقع ملے گا۔

ڈریو کرچوف کے مطابق پہلے ویڈیوز کا دورانیہ صرف ایک منٹ تھا اور آئندہ ہفتوں میں دنیا بھر میں صارفین طویل ویڈیوز بنا سکیں گے۔
ٹک ٹاک کے پروڈکٹ منیجر نے کہا کہ کچھ لوگ شاید پہلے ہی تین منٹ کی ویڈیوز بنا رہے ہوں کیونکہ ہم نے دنیا بھر میں صارفین کو تجرباتی ویڈیوز بنانے کا موقع دینا شروع کر دیا ہے۔

ٹک ٹاک چین کی بائٹ ڈانس کی ملکیت ہے اور یہ دنیا میں مقبول ترین سوشل میڈیا ایپس میں سے ایک ہے لیکن اسے یوٹیوب اور ٹرلر سمیت دیگر حریفوں کا بھی سامنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ٹیلیگرام کے صارفین میں حیران کن حد تک اضافہ

اپنا تبصرہ بھیجیں