lady deiana estatua

شہزادی ڈیانا کا مجسمہ لندن میں کنسنگٹن محل کے سنکن گارڈن میں نصب

EjazNews

شہزادہ ولیم اور ہیری نے اپنی والدہ کی 60ویں سالگرہ کے موقع پر منعقد کی گئی ایک تقریب میں اس مجسمے کی رونمائی کی۔شہزادہ ہیری جو اپنی اہلیہ اور 2 بچوں کے ساتھ امریکہ میں مقیم ہیں وہ تقریب سے قبل قرنطینہ کی مدت مکمل کرنے کے لیے گزشتہ ہفتے ہی برطانیہ پہنچ گئے تھے۔تاہم شہزادی ڈیانا کے مجسمے کی تقریب رونمائی انتہائی محدود پیمانے پر اور سادہ انداز میں کی گئی۔تقریب رونمائی میں شہزادہ ولیم، شہزادہ ہیری، شہزادی ڈیانا کی 2 بہنوں، ان کے ایک بھائی اور اسٹیچو کمیٹی کے اراکین سمیت مہمانوں کی محدودد تعداد نے شرکت کی۔

برٹش میڈیا کے مطابق 2017 میں جب ولیم اور ہیری نے اپنی والدہ کے مجسمے کی تیاری کا حکم دیا تھا تو انہوں نے کہا تھا کہ انہیں امید ہے کہ یہ مجسمہ، محل آنے والوں کو شہزادی ڈیانا کی زندگی کی یاد دلائے گا۔کنسنگٹن محل نے کہا کہ جب شہزادی ڈیانا وہاں رہائش پذیر تھیں تو سنکن گارڈن ان کی پسندیدہ جگہوں میں سے ایک تھا۔اس باغ کی ازسرِنو تزئین و آرائش کے لیے 4 ہزار پھول اگائے گئے اور اس کی تیاری میں ایک ہزار گھنٹے لگا۔سنکن گارڈن جو لندن کے ہائیڈ پارک کے اندر واقع ہے اسے ایک دن کیلئے عوام کے لیے مفت کھولا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  امریکہ میں نفرت ، مذہبی تعصب اور نسل پرستانہ سوچ کیخلاف قرارداد منظور

اس موقع پر برطانوی شہزادوں نے کہا کہ ہم ان (شہزادی ڈیانا) کی محبت، طاقت اور کردار کو یاد کرتے ہیں، وہ خوبیاں جنہوں نے انہیں دنیا بھر میں اچھائی کے لیے ایک قوت بنادیا، جس نے لوگوں کی بہتری کی خاطر ان کی زندگیاں بدلیں۔ہر دن ہم یہ خواہش کرتے ہیں کہ وہ آج بھی ہمارے ساتھ ہوتیں اور ہم امید کرتے ہیں کہ اس مجسمے کو شہزادی ڈیانا کی زندگی اور ان کی میراث کی علامت کے طور پر ہمیشہ دیکھا جائے گا۔
برطانوی شہزادوں نے اپنی والدہ کو یاد کرنے والے دنیا بھر کے تمام افراد کا شکریہ بھی ادا کیا۔

یاد رہے:شہزادی ڈیانا 31 اگست 1997 کو پیرس میں ایک کار حادثے میں انتقال کرگئی تھیں، اس وقت ان کے بڑے بیٹے، شہزادہ ولیم کی عمر 15 سال جبکہ شہزادہ ہیری کی عمر 12 برس تھی۔

دونوں بھائی، شہزادی ڈیانا کی موت سے پہنچنے والے صدمے پر گفتگو کرچکے ہیں کہ ان کی ذہنی صحت کئی سالوں تک اس حادثے سے متاثر رہی تھی۔

یہ بھی پڑھیں:  بھارتی وزیراعظم نے 21دن کیلئے انڈیا میں لاک ڈاؤن لگا دیا

اپنا تبصرہ بھیجیں