Shaukat-Tarin-in-NA-Budget

قومی اسمبلی سے فنانس ترمیمی بل کثرت رائے سے منظور

EjazNews

 قومی اسمبلی کا اجلاس شروع ہوا اور وزیر اعظم عمران خان کی موجودگی میں وزیر خزانہ کی جانب سے پیش کردہ ترمیمی بل پر اپوزیشن نے سخت مخالفت کی۔

وزیراعظم عمران خان کی اسمبلی ہال آمد کے موقع پر حکومتی بینچز سے عمران خان کے حق میں نعرہ بازی کی گئی جبکہ اپوزیشن لیڈر شہباز شریف ایوان میں نہ پہنچ سکے۔

imran_khan_budget
وزیراعظم عمران خان فنانس بل کی

فنانس ترمیمی بل کی تحریک کے حق میں 172 جبکہ مخالفت میں 138 ووٹ پڑے جس کے بعد قومی اسمبلی میں وزیر خزانہ نے بل کی شق وار منظوری کے لیے مسودہ پڑھ کر سنایا۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ ہمارے چھ سے سات اراکین یہاں موجود نہیں انہیں بلا کر لائیں ۔ باہرموجود تمام اراکین کو اندر بلا کر لائیں۔

عبدالقادر پٹیل بلاول بھٹو کے کہنے پر خورشید شاہ، شازیہ مری، پرویز اشرف کو بلا کر لائے۔

قومی اسمبلی میں فنانس بل کی شق وار منظوری کا عمل مکمل ہوا اور اسپیکر نے بجٹ کی منظوری کے لیے وائس ووٹ کیا اور بجٹ کو منظور کر لیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں:  چین نے ایک وقت میں پاکستان سے سیکھا لیکن اب وقت ہے کہ پاکستان، چین سے سیکھے:وزیراعظم

اپوزیشن نے وائس ووٹ کی مخالفت نہیں کی کیونکہ انہیں معلوم تھا کہ ان کے پاس اسے مسترد کرنے کے لیے درکار ووٹ نہیں ہیں۔

فنانس بل کی شق دو پر اپوزیشن کی تمام ترامیم مسترد کی گئی جب کہ وزیرخزانہ کی پیش کردہ ترمیم منظور ہو گئی ۔

اپوزیشن نے کسان ، نوکری پیشہ سمیت دیگرشعبوں پر اضافی ٹیکسز کو مسترد کرتے ہوئے واپس لینے کا مطالبہ کیا۔

قومی اسمبلی میں موبائل فون کال پر 75 پیسے ٹیکس سے متعلق شق 5 کثرت رائے سے منظور کی گئی ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں