covid_pabandiya

کون سی پابندی برقرار رکھی گئی ہیں اور کن پابندیوں میں نرمی کی گئی ہے؟

EjazNews

این سی او سی کا اجلاس وزیر برائے ترقی و منصوبہ بندی اور چیئرمین این سی او سی اسد عمر اور نیشنل کوآرڈنیٹر لیفٹیننٹ جنرل حمود الزماں خان کی زیر صدارت ہوا۔

اجلاس کے دوران ملک بھر میں کورونا وائرس کی موجودہ صورت حال کا جائزہ لیا گیا، جس میں کووڈ-19 سے متعلق عائد پابندیوں میں نرمی سے متعلق فیصلے کیے گئے۔

این سی او سی کے اجلاس میں کیے جانے والے فیصلوں پر یکم جولائی سے عمل درآمد شروع ہوگا اور یہ 31 جولائی 2021 تک کے لیے ہے۔

اجلاس میں جن پابندیوں میں نرمی سے متعلق فیصلے کیے گئے۔وہ مندرجہ ذیل ہیں:

مارکیٹس، دیگر کاروباری سرگرمیاں رات 10 بجے تک جاری رکھنے کی اجازت ہوگی جبکہ پیٹرول پمپس، طبی سہولیات، ادویات کی دکانیں، ویکسینشین سینٹر، دودھ دہی کی دکانیں، تندور اور ٹیک اوے کے لیے 24 گھنٹے کی اجازت ہو گی۔

انڈور اور آؤٹ ڈور ڈائنگ کی اجازت رات 12 بجے تک ہوگی جبکہ انڈور ڈائنگ کی اجازت مقرر تعداد کے 50 فیصد کے ساتھ ہوگی اور انڈور ڈائنگ کی سہولت استعمال کرنے والوں کے لیے ویکسینیشن کو لازمی قرار دیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  معیشت حکومت کو مضبوط کرنے کیلئے کی جاتی ہے یاعوام کو

ریسٹورانٹس اور ہوٹلز کی انتظامیہ آنے والے صارفین کے ویکسینیشن سرٹیفکیٹ چیک کرنے کے ذمہ دار ہوں گے اور ساتھ ہی اسٹاف اور منتظمین کی ویکسیشن کو بھی لازمی قرار دیا گیا ہے جبکہ ٹیک اوے کے لیے 24 گھنٹے کی اجازت ہوگی۔

کووڈ 19 کے ایس او پیز کے مطابق 400 مہمانوں کے ساتھ آؤٹ ڈور شادی کی تقریبات کی اجازت ہوگی۔

انڈور شادی کی تقریبات کے لیے مہمانوں، اسٹاف اور منتظمین کا ویکسینیشن لگوانا ضروری ہے اور ان کے سرٹیفکیٹ چیک کرنے کی ذمہ داری منتظمین پر عائد ہوگی اور انڈور شادی کے لیے مہمانوں کی تعداد کو 200 تک محدود کردیا گیا ہے۔

مزارات کو ایس او پیز کے ساتھ مقامی انتظامیہ کی اجازت سے کھولا جاسکے گا۔

سینما گھروں کو کووڈ 19 کے ایس او پیز کے ساتھ رات ایک بجے تک کھولنے کی اجازت ہوگی اور یہاں آنے والوں کی ویکسینیشن ہونا لازمی ہے اور منتظمین صارفین کے سرٹیفکیٹ کی جانچ پڑتال کریں گے جبکہ تمام اسٹاف کی ویکسینیشن بھی لازمی قرار دی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  انگلینڈ فائنل میں پہنچ گیا، نیوزی لینڈ کے ساتھ فائنل کھیلے گا

کورونا وائرس سے متعلق مذکورہ پابندیاں برقرار رہیں گی:

سرحدوں پر عائد بندش برقرار رہے گی اور اس حوالے سے این سی او سی وفاقی اکائیوں سے تفصیلات شیئر کرتا رہے گا۔

انڈور یا آؤٹ ڈور ہر قسم کی سماجی، ثقافتی، موسیقی، مذہی یا دیگر تقریبات پر پابندی برقرار رہے گی۔

تمام سرکاری اور نجی دفاتر کے اوقات کار مکمل طور پر بحال ہوجائیں گے اور حاضری 100 فیصد کردی جائے گی۔

کراٹے، بکسنگ، مارشل آرٹس، رگبی، واٹر پولز، کبڈی اور کشتی پر عائد پابندی برقرار رہے گی۔

انڈور جم سے متعلق سہولیات کے استعمال کی اجازت صرف ویکسینیشن لگوانے والے صارفین کو ہوگی جبکہ جم کے اسٹاف اور منتظمین کے لیے بھی ویکسین کو لازمی قرار دیا گیا ہے جس کی ذمہ داری جم کے مالکان پر عائد ہوگی۔

اس حوالے سے جم انتظامیہ ویکسینیشن سرٹیفکیٹ کی جانچ کے لیے طریقہ کار بھی بنائے گی۔

ٹرانسپورٹ کو مقرر حد سے 70 فیصد تک مسافروں اور سخت ایس او پیز کے ساتھ اجازت ہوگی جبکہ ماسک پہننے کو لازمی قرار دیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  جس معاشرےمیں انسانیت ہے وہاں اللہ کی برکت ہوتی ہے:وزیراعظم

ٹرین سروس کو بھی مقرر حد سے 70 فیصد مسافروں کے ساتھ سخت ایس او پیز اور لازمی ماسک کے ساتھ اجازت ہوگی۔

اس کے علاوہ امیوزمنٹ پارکس، واٹر اسپورٹس اور سوئمنگ پولز کو مقرر حد سے آدھی تعداد کے ساتھ کھولنے کی اجازت دی جائے گی۔
عوام کا ماسک پہننا لازمی قرار دیا گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں