Kim Hong Bin

دونوں ہاتھوں کی انگلیوں سے محروم کم ہانگ بن براڈ پیک چوٹی سر کرنے کیلئے روانہ

EjazNews

دنیا کی 14بلند ترین چوٹیا ںسر کرنے والوں کی تعداد 43ہے جن میں ایک اطالوی جوڑے سمیت چار خواتین شامل ہیں۔ خواتین میں سے ایک تیز ترین ماؤنٹ ایورسٹ اور کے ٹو سر کرنے والی نیپالی کوہ پیما منگما گیابو شرپا بھی شامل ہیں۔ جن کا نام گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں بھی موجود ہے۔

سب سے پہلے اکتوبر 1986 میں اطالوی کوہ پیما رین ہولڈ میسنر نے دنیا کی 14 آٹھ ہزار میٹر سے بلند چوٹیاں سر کی تھیں۔ جس کے بعد یہ سلسلہ شروع ہوا۔

دونوں ہاتھوں کی 10 انگلیوں سے محروم کوہ پیما کم ہانگ بن نے8ہزار میٹر سے بلند چوٹیاں سر کرنے کا آغاز بھی 2006 میں پاکستان سے کیا تھا جب انھوں نے گیشربرم ٹو کو سر کیا۔ اسی سال انھوں نے شیشہ پنگمہ بھی سر کر لی تھی۔ 2007 میں کم ہانگ بن ماونٹ ایورسٹ سر کرنے والے کوہ پیماؤں میں شامل ہوگئے جبکہ اس سے اگلے ہی سال یعنی 2008 میں وہ نیپال کی تیسری بڑی چوٹی مکالو بھی سر کر چکے تھے۔

یہ بھی پڑھیں:  دنیا میں پائے جانے والے چند مقدس پہاڑ

ایک سال سے بھی کم عرصے کے بعد یعنی سال 2009 کے آغاز میں کم ہانگ بن براعظم انٹارکٹیکا میں ماؤنٹ ونسن کو سر کرکے تین سال کے عرصے میں دنیا کے تمام براعظموں میں سات بلند ترین چوٹیاں سرکرنے کا اعزاز اپنے نام کر چکے تھے۔

اس کے بعد بھی انھوں نے آٹھ ہزار میٹر سے بلند چوٹیاں سرکرنے کا مشن جاری رکھا اور 2009 میں نیپال میں دھولگری اور 2011 میں چواویو، 2012 میں پاکستان میں کے ٹو اور 2013 میں نیپال کی کنگچنجنگا، 2014 میں مناسلو، 2017 میں لہوٹسے اور نانگا پربت، 2018 میں انا پورنا اور 2019 میں گیشربرم ون سر کیں۔

دنیا کے 14 بلند ترین یعنی آٹھ ہزار سے بلند ترین چوٹیوں میں سے پانچ پاکستان میں ہیں جن میں کے ٹو، نانگا پربت، گیشربرم ون اور ٹو اور براڈ پیک شامل ہیں۔

1991 میں الاسکا میں ایک چوٹی دینالی سر کرنے کی کوشش میں کم ہانگ بن ایک حادثے کا شکار ہو گئے تھے جس کے نتیجے میں ان کے ہاتھوں کی انگلیاں کاٹ دی گئی تھیں۔ اس کے بعد سے وہ بغیر انگلیوں کے پہاڑ سر کر رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  ٹوئٹر پر بلیو ٹک کیسے حاصل کیا جاتا ہے؟

دونوں ہاتھوں کی 10 انگلیوں سے محروم کوہ پیما کم ہانگ بن پاکستان کی براڈ پیک چوٹی سر کرنے کے مشن پر روانہ ہو چکے ہیں۔ اپنے مشن میں کامیابی کی صورت میں وہ معذوری کے باوجود 14 بلند ترین چوٹیاں سر کرنے والے دنیا کے پہلے کوہ پیما بن جائیں گے۔

جنوبی کوریا سے تعلق رکھنے والے 54 سالہ کم ہانگ بن آٹھ ہزار میٹر سے بلند چوٹیاں سر کرنے کی اپنی مہم کے آخری مشن کے سلسلے میں گذشتہ ہفتے اسلام آباد پہنچے تھے جہاں سے براستہ سڑک وہ سکردو گئے اور اپنے مشن کا آغاز کیا۔ وہ 8047 میٹر بلند براڈ پیک کو سرکرنے کی کوشش کریں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں