waly loag

خواتین کی ویڈیو بنانے پر کافی تذلیل ہوئی اس کی معافی مانگتا ہوں

EjazNews

سوشل میڈیا پر شہرت حاصل کرنے کے لیے نت نئے طریقے اپنائے جاتے ہیں،جن میں سے آج کل پرینک بھی بڑی تیزی سے پھیل رہا ہے۔

سوشل میڈیا پر کام کرنے والے نت ئے آئیڈیا بھی ڈھونڈتے ہیں اور طریقے بھی۔

چونکہ ہمارے ہاں الیکٹرانک میڈیا میں کام کرنے والوں کی باقاعدہ ٹریننگ کا کہیں کوئی انتظام نہیں ہے جہاں سے وہ یہ سمجھ کر نکل سکیں کہ آئیڈیاز کی حدود کیا ہوتی ہیں۔

سوشل میڈیا پر کام کرنے والے خان علی بھی ان ہی لوگوں میں سے ایک ہیں جنہوں نے اس میڈم میں بڑا نام کمایا۔ ان کے کامیڈی پرینک قابل تعریف ہیں۔ لیکن ان کا ایک آئیڈیا ان کی گرفتاری کا سبب بن گیا اور وہ تھا عورتو ں کے متعلق پرینک کرنا ۔

ان کی تمام ویڈیوز کو اگر دیکھا جائے تو ان سب میں مزاح بھرپور ہے۔ اور جس لگن اور جستجو سے وہ ویڈیوز بناتے ہیں پاکستان میں بڑے کم لوگوں کی ایسی ویڈیوز دیکھنے کو ملتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  وزیراعظم کا ہرقسم کی صنعتوں کیلئے بجلی سستی کرنے کا اعلان

خواتین کو پرینک کے نام پر ہراساں کرنے کے واقعات سامنے آنے کے بعد خان علی کو کو گرفتار کیا گیا ہے۔

پنجاب پولیس کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق خواتین کو پرینک کے نام پر ہراساں کرنے والے ملزم کے لیے خلاف مقدمہ درج کر کے گرفتار کر لیا گیا ہے۔

ایف آئی آر میں ان کو لڑکیوں کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کا ملزم ٹھہرایا گیا ہے۔ علی کی ٹیم کو بھی ان الزامات میں شریک کیا گیا ہے۔
علی کی سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو بھی شیئر کی گئی ہے جس میں وہ معافی مانگ رہے ہیں کہ وہ آئندہ سے ایسی ویڈیوز کبھی بھی نہیں بنائیں گے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں