imran_khan_pti_tarjman

موجودہ بجٹ ترقی کا بجٹ ہے:وزیراعظم

EjazNews

وزیر اعظم کی زیر صدارت پاکستان تحریک انصاف کے ترجمانوں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا انہوں نے کہا کہ میں مطمئن ہوں کیونکہ ملک کی معیشت نہ صرف مستحکم ہے بلکہ درست سمت میں آگے بڑھ رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کورونا کے دور میں جب عالمی سطح پر ہر معیشت کو سخت دھچکا لگا اور معاشی مسائل پیدا ہوئے ہیں وہاں پاکستان نے کامیاب حکمت عملی سے معاشی سفر طے کیا ہے۔ موجودہ بجٹ ترقی کا بجٹ ہے جس کا مقصد معاشی استحکام کو نہ صرف مزید مستحکم کرنا بلکہ معیشت کے اہم شعبوں زراعت، صنعت، ہاوسنگ وغیرہ جیسے اہم شعبوں کو فروغ دینا ہے۔

اجلاس میں وفاقی وزرا، معاونین خصوصی، پارٹی رہنما اور ترجمان شریک ہوئے جس میں ملکی صورتحال بالخصوص حکومت کی جانب سے پیش کردہ عوامی ترقیاتی بجٹ، بجٹ میں عوام کو پہنچائے جانے والے ریلیف اور خصوصاً معاشی ترقی کے عمل کو تیز کرنے کے حوالے سے اقدامات زیر غور آئے۔

یہ بھی پڑھیں:  وزارت داخلہ کے نوٹیفکیشن میں تحریک لبیک کے بارے میں کیا لکھا گیا ہے؟

پارٹی رہنماوں نے ایک متوازن، عوام دوست اور معاشرے کے ہر طبقے کے لیے مثبت بجٹ پیش کرنے پر وزیر اعظم اور حکومتی معاشی ٹیم کو مبارکباد دی۔

حکومت کی جانب سے اٹھائے گئے چند اہم اقدامات کی نشاندہی کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ کامیاب جوان پروگرام، صحت کارڈ، 10 بلین ٹری سونامی، سائنس و ٹیکنالوجی کا فروغ، تخفیف غربت اور روزگار کے مواقع پیدا کرنے جیسے پروگرامز پر خصوصی توجہ دینے کا مقصد ملک کو درپیش چیلنجز پر موثر طریقے سے قابو پانا ہے۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کی بھرپور کوشش رہی ہے کہ بجٹ میں معاشرے کے ہر طبقے کے لیے امید کی کرن ثابت ہو۔

وزیراعظم عمران خان نے پارٹی ترجمانوں کو ہدایت کی کہ بجٹ کے نکات کے بارے میں عوام کو بھرپور آگاہی فراہم کریں تاکہ غلط فہمیاں پھیلانے والے عناصر کے عزائم ناکام ہوں۔

وزیر اعظم عمران خان کوکمزور طبقات کو حکومت کی جانب سے سبسڈی فراہم کرنے کے حوالے سے متعارف کرائے جانے والے نئے نظام پر بریفنگ دی گئی۔

یہ بھی پڑھیں:  قرضی کی واپس میں نرمی غریب ممالک کی تیز ترین مدد کا موثر طریقہ ہے:وزیراعظم

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ٹارگیٹڈ سبسڈی کی بدولت کمزور طبقات کو بنیادی اشیائے ضروریہ کی خریداری میں مالی معاونت فراہم کی جائے گی اور اس حوالے سے حکومت تمام مالی وسائل فراہم کرنے کے لیے پرعزم ہے۔

نہوں نے ہدایت کی کہ سبسڈی کے نئے نظام کو جلد از جلد حتمی شکل دی جائے تاکہ اس کا آئندہ ماہ باقاعدہ اجرا کیا جاسکے۔

اجلاس میں وزیر خزانہ شوکت ترین، معاونین خصوصی ڈاکٹر ثانیہ نشتر، ڈاکٹر وقار مسعود، ڈاکٹر شہباز گل، صدر نیشنل بینک عارف عثمانی و متعلقہ افسران شریک ہوئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں