Tik_tok

ٹک ٹاک ایپ کے ذریعے لڑکیوں کی فروخت کرنے والا گروہ گرفتار

EjazNews

بنگلہ دیشی پولیس نے ایک ایسے گروہ کے نصف درجن سے زائد افراد کو گرفتار کیا ہے، جو خواتین کو جسم فروشی کے لیے قائل کرتا تھا۔ یہ گروہ اپنے گھناؤنے مقصد کے لیے ٹک ٹاک ایپ کا سہارا لیتا تھا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق گرفتار کیے جانے والے گروہ کے 7افراد نوجوان لڑکیوں اور خواتین سے ٹک ٹاک کے ذریعے پہلے رابطے استوار کرتے تھے اور پھر انہیں اپنے چنگل میں پھانس کر ہمسایہ ملک بھارت کی جسم فروش منڈی میں فروخت کر دیتے تھے۔

یہ گروہ ان خواتین کو پرکشش نوکریاں فراہم کرنے کا جھانسہ دے کر اپنے جال میں پھنساتے تھے۔

خواتین کو جسم فروشی کے لیے دھوکے سے فروخت کرنے والے اس گروہ کی ایک ویڈیو وائرل ہوئی ہے، جس میں ایک عورت پر تشدد کیا جا رہا تھا کیونکہ وہ جسم فروشی کے دھندے کو اپنانے سے انکاری تھی۔

بنگلہ دیشی پولیس افسر کے مطابق جس خاتون پر تشدد کی ویڈیو وائرل ہوئی تھی، وہ اس وقت بھارت میں پولیس کی تحویل میں ہے۔اس ویڈیو نے بنگلہ دیش اور بھارت کی پولیس کو تفتیشی عمل شروع کرنے پر مجبور کیا اور نتیجے میں جسم فروشی پر مجبور کرنے والے مشتبہ گروہ کے سات افراد کو گرفتار کیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں:  مردہ بچے کی پیدائش یا حمل کے ضیاء پر والدین کو تین چھٹیاں بمعہ تنخواہ ملیں گی

بنگالی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بنگلہ دیشی پولیس کے تفتیشی افسر محمد شاہد اللہ کا کہنا ہے کہ یہ افراد جن نوجوان لڑکیوں اور عورتوں کو فریب دے کر اپنے جال میں پھانستے تھے، ان کا تعلق کم آمدنی والے طبقے سے ہے۔ ان خواتین کو بڑی تنخواہ کا لالچ دیا جاتا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں