sindh_cabinet

سندھ کابینہ نے سرکاری ملازمین کیلئے کیا فیصلے کیے ہیں؟

EjazNews

سندھ کابینہ نے پنشن ریفارمز سکیم کی منظوری دیدی ہے جسکے تحت تقریبًا 894.4 ارب روپے کی بچت ہوگی، کابینہ نے سرکاری ملازمین کی قبل از وقت ریٹائرمنٹ کی حد مقرر کرتے ہوئے قبل از وقت ریٹائرمنٹ کیلئے کم از کم 25 سال سروس اور 55 برس کی عمر کی تجویز دی گئی ہے۔ فیملی پنشن بیوی، شوہراور 21 سال سے کم عمر بیٹے تک محدود ہوگی،کابینہ نے کے آئی سی وی ڈی کو اپنے عملہ سمیت ایس آئی سی وی ڈی کے حوالے کرنے کی منظوری دیدی۔ کابینہ نے ایس آر بی کی کارکردگی کو سراہا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیرصدارت وزیراعلیٰ ہاؤس میں صوبائی کابینہ کا اجلاس منعقد ہوا۔ جس میں صوبائی وزراء ، مشیران ، چیف سیکرٹری ممتاز شاہ اور دیگر متعلقہ افسران شریک ہوئے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے محکمہ خزانہ کے انچارج وزیر کی حیثیت سے کابینہ کو بتایا کہ 2012 میں سرکاری ملازمین کی تعداد 477570 تھی اور انکی ماہانہ تنخواہ اور پنشن کا بل بالترتیب 11.78 ارب اور 6.523 ارب روپے تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ 2020 میں ملازمین کی تعداد بڑھ کر 493182 ہوگئی اور ماہانہ تنخواہ کا بل بڑھ کر 23.97 ارب روپے ہو گیا جبکہ پنشن بل بڑھ کر 13.329 ارب روپے ہوگیا۔

یہ بھی پڑھیں:  الطاف حسین نے بھارتی وزیراعظم سے سیاسی پناہ مانگ لی

اپنا تبصرہ بھیجیں