cars

وفاقی بجٹ میں کون سی گاڑیاں سستی اور مہنگی کرنے کی تجویز ہے؟

EjazNews

وفاقی بجٹ برائے مالی سال 21،22 20میں امپورٹڈ گاڑی مہنگی کرنے کی تجویز ہےجبکہ میں لوکل اسمبلڈ گاڑیاں سستی ہونے کا امکان ہے۔

خیال ہے پاکستان میں مینوفیکچر ہونے والی گاڑیوں کی قیمت ایک لاکھ سے تین لاکھ تک کم ہوجائیگی۔ امپورٹیڈ گاڑیوں پر فرسودگی (Depriciation) الائونس نہ دینے کی تجویز بجٹ میں پیش کی جارہی ہے۔ فرسودگی الائونس کی شرح ایک فیصد ماہانہ (12 فیصد سالانہ) اس وقت تین سال سے زائد پرانی گاڑی منگوانے والے کو مل رہا ہے جو وفاقی بجٹ میں ختم کرنے کی تجویز ہے۔

بڑی گاڑیوں لینڈ کروزر، رینج روور، مرسڈیز، بی ایم ڈبلیو اور 5 کروڑ مالیت کی بڑی گاڑیوں کی درآمد پر بھی فرسودگی الائونس نہ دینے کی تجویز ہے پاکستان میں بننے والی گاڑیوں پر آج کل دس فیصد فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی اور 7 فیصد ایڈیشنل کسٹم ڈیوٹی وصول ہو رہی ہے ایف بی آر کے ذرائع کے مطابق نئے وفاقی بجٹ میں لوکل اسمبلڈ گاڑیوں پر فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی یا ایڈیشنل کسٹم ڈیوٹی وصول نہ کرنے کی تجویز شامل ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  13جولائی1931کے 22شہداءکو سلام پیش کرتے ہیں:وزیراعظم پاکستان

اپنا تبصرہ بھیجیں