In India, uranium was once again seized from suspects

انڈیا میں ایک مرتبہ پھر مشتبہ افراد سے یورینیم پکڑی گئی

EjazNews

رپورٹ میں کہا گیا کہ عہدیدار اب تک اصل مشتبہ شخص کو گرفتار کرنے میں کامیاب نہیں ہوسکے جس سے یہ حساس مادہ خریدا گیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق ایس پی چندن جھا کا کہنا تھا کہ ‘معدنیات رکھنے اور فروخت کرنے کی منصوبہ بندی کرنے پر 7 افراد کو گرفتار کیا گیا، جس کا شبہ ہے کہ یہ یورینیم ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘ہم اس معاملے کی مزید تفتیش کر رہے ہیں اور معدنیات کو جانچ کے لیے لیب بھیج دیا گیا ہے۔

تاہم رپورٹ میں کہا گیا کہ بوکارو پولیس کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز اور ایف آئی آر میں معدنیات کو یورینیم بتایا گیا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ ‘ایس پی جھا نے اس بارے میں کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کیا تھا کہ آیا اس میں کوئی تفتیشی ایجنسی شامل ہے یا نہیں اور انہوں نے اس پر بھی کوئی تبصرہ نہیں کیا کہ آیا وہ گرفتار ملزم سے حراست کے دوران پوچھ گچھ کرنا چاہتے ہیں یا نہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  جوہری معاہدے میں کیے جانے والے معاہدے پورے کیے جائیں پھر مذاکرات ہوں گے:ایرانی صدر حسن روحانی

مشتبہ افراد، جن پر غیر قانونی یورینیم کی تجارت میں ملوث گروہ کا حصہ ہونے کا شبہ ہے، اس کے خریدار کی تلاش کر رہے تھے اور اس کی قیمتیں 50 لاکھ بھارتی روپے مقرر کی تھیں۔

کہا گیا کہ ‘یہ واضح نہیں ہے کہ انہوں نے تابکار مادہ کس طرح حاصل کیا، تفتیش کے دوران انہوں نے مغربی بنگال، گریدی اور چند دیگر علاقوں کا ذکر کیا، ان کے پاس سے سات موبائل فون اور ایک موٹر سائیکل بھی قبضے میں لیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ بھارتی پولیس نے 7 کلوگرام (15.4 پاؤنڈ) قدرتی یورینیم ضبط کیا تھا اور مغربی ریاست مہاراشٹر میں انتہائی تابکار مادے کو ‘غیر قانونی طور پر رکھنے’ کے الزام میں دو افراد کو گرفتار کیا تھا۔

بھارت میں یہ دوسرا موقع تھا جب حالیہ برسوں میں اس طرح کے انتہائی حساس مادے کو پولیس نے قبضہ کیا۔

اس سے قبل 2016 میں پولیس نے مہاراشٹر کے علاقے میں تقریبا 9 کلوگرام (19.8 پاؤنڈ) یورینیم ضبط کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں:  افغانستان میں دھماکہ، 6افراد ہلاک ، کئی زخمی

یورینیم جوہری دھماکا خیز مواد اور طبی تکنیک سمیت متعدد چیزوں میں استعمال ہوتا ہے، چند لوگوں نے یورینیم کی چوری یا غیر قانونی طور پر کان کنی کی وجہ سے بھارت میں جوہری تحفظ کے بارے میں تشویش پائی جاتی ہے۔

یہ بھارت میں جوہری منڈی کے موجود ہونے کا امکان بھی ظاہر کرتی ہے جو بین الاقوامی غیر قانونی منڈیوں سے منسلک ہوسکتی ہے۔

رواں ماہ کے آغاز میں مہاراشٹر سے یورینیم قبضے میں لینے اطلاعات سامنے آنے کے بعد پاکستان نے شدید تشویش کا اظہار کیا تھا اور وہاں ریاستی کنٹرول کے طریقہ کار میں پائے جانے والے خامیوں کی نشاندہی کی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں