pak_army

ایف سی پر حملے ،وزیراعظم کی شدید مذمت،دہشت گردوں کیخلاف ہماری لڑائی جاری رہے گی:وزیراعظم

EjazNews

کوئٹہ اور تربت میں ایف سی پر 2 دہشت گرد حملے ہوئے ہیں جس کے نتیجے میں چار جوان شہید جبکہ 8 زخمی ہوئے ہیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق کوئٹہ اور تربت میں ایف سی پر 2 دہشت گرد حملے ہوئے ہیں۔

پہلے حملے میں پیر اسماعیل زیارت کے قریب ایف سی پوسٹ کو نشانہ بنایا گیا جہاں فائرنگ کے شدید تبادلے میں چار سے پانچ دہشت گرد مارے گئے اور سات سے آٹھ دہشگرد زخمی ہوئے۔

فائرنگ کے تبادلے میں ایف سی کے چار بہادر جوان شہید ہوئے جبکہ چھ زخمی ہوئے۔

دوسرے واقعے میں تربت میں ایف سی کی گاڑی کو آئی ای ڈی سے نشانہ بنایا گیا ہے۔ واقعہ میں 2 ایف سی اہلکار زخمی ہوئے اور پانچ دہشت گردبھی مارے گئے ہیں۔

ترجمان پاک فوج کا کہنا ہے کہ ریاست مخالف عناصر اس طرح کے بزدلانہ ناخوشگوار واقعات میں ملوث ہیں۔

دشمن انٹیلی جنس ادارے مشکلات سے حاصل کئے گئے امن اور بلوچستان کی خوشحالی کو نقصان نہیں پہنچاسکتے۔

یہ بھی پڑھیں:  کورونا وائرس اور پابندیاں

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی فورسز اپنی جانوں اور خون کا نذرانہ دے کر اس طرح کے مذموم ارادوں کو ناکام بنانے کے لیے پرعزم ہیں۔

جبکہ وزیراعظم نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ گزشتہ شب بلوچستان میں ہمارے سپاہیوں پر ہونےوالے دہشتگردحملے، جس کے نتیجے میں4 جوان شہیداور 8زخمی ہوئے،کی شدیدمذمت کرتاہوں۔میری دعائیں اورہمدردیاں شہداءکے اہل خانہ کیساتھ ہیں۔ان دہشتگردوں کیخلاف ہماری لڑائی جاری رہے گی اورہم انہیں بلوچستان میں امن و ترقی تاراج کرنےکی اجازت نہیں دینگے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں