Shehbaz_Sharif_ Lahore

آئی ایم ایف کے مطالبات کو بجٹ کا نام دے کر عوام پر مسلط نہیں ہونے دیں گے:شہباز شریف

EjazNews

شہبازشریف نے اجلاس سے خطاب میں کہا کہ حکومت کے پیش کردہ معاشی اعدادوشمار ناقابل اعتبار اور قوم سے صریح دھوکہ ہیں، آئی ایم ایف کے مطالبات کو بجٹ کا نام دے کر عوام پر مسلط نہیں ہونے دیں گے،معیشت کی بربادی کے بعد معاشی غلط بیانی قوم کے مستقبل سے کھیلنے کے مترادف ہے۔

اجلاس میں شہبازشریف نے مسلم لیگ (ن) کے 3 جون کو پری بجٹ سیمینار کے انعقاد کے حوالے سے حکمت عملی پر مشاورت کی، سابق وزرا خزانہ اسحاق ڈارنے اجلاس کو ملک کے معاشی حقائق کے بارے میں بریفنگ دی ۔

شہباز شریف نے ہدایت کی کہ اکنامک ایڈوائزری کونسل موجودہ حالات میں عوامی مفادات کے تحفظ کے لئے تجاویز پیش کرے،عوام کو آگاہ کرنا ضروری ہے کہ کس طرح معاشی تباہی ملک پر مسلط کی جارہی ہے، ہم نے قوم کو سچائی بیان کرنی ہے تاکہ تاریخ میں گواہی رہے اور کل کوئی بہانہ نہ بناسکے۔

یہ بھی پڑھیں:  کشمیری اپنا وہ حق مانگ رہے ہیں جو عالمی برادری، اقوام متحدہ کی سکیورٹی کونسل نے دیا تھا:وزیراعظم

شہبازشریف نے کہاکہ اولین کوشش ہے کہ عوام دشمن بجٹ کسی قیمت پر منظورنہ ہونے دیا جائے، انہوں نے واضح کیا کہ ہم نے آج تک قوم کو جو بھی بتایا ہے، وہ سچ ثابت ہوا ہے،حکومتی معاشی کارکردگی بے نقاب کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ اکنامک ایڈوائزری کونسل عوام دشمن بجٹ منظور ہونے سے روکنے کیلئے حکمت عملی کا جائزہ لے ، مہنگائی، بے روزگاری اور معاشی زبوں حالی سے عوام کو درپیش سنگین مشکلات اجاگر کی جائیں، بجلی، گیس، ادویات، علاج، تعلیم اور اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں ہوشرا اضافے کے حقائق کو اجاگر کیا جائے۔

ان کا کہنا تھا حکومت جھوٹ سے اعدادوشمار بدل سکتی ہے لیکن زمینی معاشی حقائق کو بدلا نہیں جاسکتا ، اجلاس میں بجٹ کے موقع پر عوامی مفادات کے تحفظ کے لئے سفارشات پر بھی غور ہوا، اجلاس میں سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی، احسن اقبال، مفتاح اسماعیل، مشاہد حسین سید، محمد زبیر، انجینئرخرم دستگیر خان ،مریم اورنگزیب ، قیصر احمد شیخ، عائشہ غوث پاشا، مصدق ملک، عطاءاللہ تارڑ، شزا خواجہ، علی پرویز اور بلال اظہر کیانی بھی شریک ہوئے، اجلاس میں ملک کی مجموعی معاشی صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیاگیا ۔

یہ بھی پڑھیں:  محمد عامر کا ورلڈ کپ کھیلنا مشکوک ہوگیا