japan_train

دنیا کی تیز رفتار ٹرینز

EjazNews

دنیا بھر میں عوام کے لیے ریل گاڑی کے سفر کو سستا اور آرام دہ تصور کیا جاتا ہے اور یہی وجہ ہے کہ ترقّی یافتہ ممالک کے درمیان تیز رفتار ریل گاڑیاں چلانے کا ایک مقابلہ سا جاری ہے۔

اس دَوڑ میں اس وقت سب سے آگے چین ہے، جہاں ٹرینز 500 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر کر سکتی ہیں، تاہم اُنھیں 350 سے 450 کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار سے چلایا جاتا ہے۔

چین ایک ایسی ٹرین کے منصوبے پر بھی کام کر رہا ہے، جو ڈھائی ہزار میل فی گھنٹے کی رفتار سے دوڑے گی یعنی کراچی سے لاہور جتنا فاصلہ صرف 31 منٹ میں طے کر لے گی۔

چین میں چلنے والی ٹرین

پھر جاپان کی بلٹ ٹرینز بھی اپنی تیز رفتاری کے سبب دنیا بھر میں مشہور ہیں، جو عموماً 320 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے دوڑتی ہیں۔ حال ہی میں جاپان میں’’ میگلیو ٹرین‘‘ نامی ایک انتہائی تیز رفتار ٹرین کا کامیاب تجربہ کیا گیا، جو 603 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلے گی، لیکن فی الحال اسے 320 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار پر چلایا جا رہا ہے، تاہم حکام کے مطابق 2027ء میں اسے اصل رفتار سے چلایا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  وزیراعظم عمران خان کے استقبال کیلئے جامنی کارپٹ کیوں منتخب کیاگیا؟

علاوہ ازیں، فرانس، جرمنی، اٹلی، اسپین، تُرکی، جنوبی کوریا،آسٹریا ، تائیوان وغیرہ میں بھی ٹرینز کا 300 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلنا عام بات ہے۔

لیکن اگر ہم پاکستان کی بات کریں تو ہم ابھی زمانے کی رفتار دیکھ رہے ہیں۔پاکستان میں ریل گاڑیوں کی رفتار عام طور پر 120 کلومیٹر فی گھنٹہ ہے، لیکن یہ 70 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلتی ہیں۔