Palestine_1

اسرائیل کی جارحیت رکنے کا نام نہیں لے رہی، خواتین و بچوں سمیت شہدا ء کی تعداد132ہو گئی

EjazNews

گزشتہ روز عرب ذرائع ابلاغ نے رپورٹ کیا تھا کہ زخمیوں کی بڑھتی ہوئی تعداد کے باعث ہسپتالوں میں مزید زخمیوں کو داخل کرنے کی گنجائش ختم ہو گئی ہے جس کی وجہ سے ابتر صورتحال مزید گھمبیر ہو گئی ہے۔

عرب میڈیا کے مطاب غزہ میں اسرائیلی حملے میں قومی پروڈکشن بنک کی عمارت مکمل طور پر تباہ ہوگئی ہے۔

ذرائع ابلاغ نے العربیہ اورالحدث ٹی وی چینلوں‌ کے حوالے سے بتایا تھا کہ جمعہ کے دن غزہ کی سرحد پر اسرائیلی فوج کی بڑی تعداد کو سرحد پر جاتے دیکھا گیا ہے۔

عالمی ذرائع ابلاغ کےمطابق اسرائیلی فوج نے جمعہ کے روز جنوبی غزہ میں خان یونس کے کئی مقامات پر بمباری کی ہے۔ اسرائیلی فوج نے بندرگاہ کے قریب پولیس کے ہیڈا کوارٹر کو بھی نشانہ بنایا ہے۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق سرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی میں الشجاعیہ کے مقام پر حماس کے ایک گروپ کو بھی نشانہ بنایا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  متحدہ عرب امارات نے پاکستان سمیت دیگر ملکوں پر پابندیاں ہٹا دیں

العربیہ کے مطابق غزہ کی پٹی میں ہسپتال زخمیوں سے بھر گئے ہیں اور ان کے پاس مزید زخمیوں کےعلاج کے لیے گنجائش ختم ہو گئی ہے۔

عرب ذرائع ابلاغ کے مطابق غزہ کی پٹی سے فلسطینی مزاحمت کاروں‌نے یہودی کالونیوں‌ پر بھی متعدد راکٹ داغے ہیں۔

امریکی ذرائع ابلاغ کے مطابق غزہ کی شمالی سرحد پر اسرائیلی فوج نے بھاری توپ خانہ اور ٹینک منتقل کردئیے ہیں جس کے بعد کسی بھی وقت بڑی کارروائی شروع ہوسکتی ہے۔

اسرائیل کے عبرانی ٹی وی چینل 12 کے مطابق اسرائیلی فوج کے ایک عہدیدار نے بتایا ہے کہ تازہ بمباری میں حماس کے 20 سرکردہ رہنمائوں کو قتل کردیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ غزہ کی پٹی میں میزائل سازی کے بیشتر نیٹ ورک اور سرنگیں تباہ کردی گئی ہیں۔

عرب میڈیا کے مطابق حماس کے القسام بریگیڈ نے صحرائے نقب میں اسرائیل کے ایک کیمیائی کار خانے پر خود کش ڈرون طیاروں سے حملہ کرنے کا دعویٰ کیا ہے تاہم اسرائیل نے کہا ہے کہ اس نے حماس کے متعدد خود کش ڈرون مار گرائے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  بھارت میں کورونا بے قابو، ایک دن میں ڈیڑھ لاکھ رجسٹرڈ کیسز

العربیہ کے مطابق گذشتہ شب حماس کی طرف سے اسرائیلی علاقوں پر 200 راکٹ داغے گئے ہیں۔

اسرائیلی فوج نے کہا ہے کہ گذشتہ پیر سے اب تک غزہ کی پٹی سے 2 ہزار گولے یا راکٹ داغے گئے ہیں۔

اسرائیل کی جانب سے غزہ کی پٹی پر فضائی حملوں کا سلسلہ مسلسل چھٹے روز بھی جاری ہے جس کے نتیجے میں خواتین و بچوں سمیت شہداء افراد کی تعداد 132 ہوچکی ہے۔امریکی اور عرب سفارتکاروں کی جانب سے کشیدگی کے خاتمے کے مطالبات کے باوجود اسرائیلی جنگی جہازوں کے غزہ پر فضائی حملے جاری ہیں۔

مقامی افراد نے کہا کہ اسرائیلی بحریہ نے بحیرہ روم سے شیلز فائر کیے تاہم کوئی بھی محصور پٹی پر نہیں لگا۔ حماس کی جانب سے اسرائیل پر راکٹ حملے بھی جاری ہیں۔ غزہ کی پٹی میں اسرائیلی حملے میں ایک ہی خاندان کے 10 افراد جاں بحق ہوگئے۔

میڈیارپورٹس میں فلسطینی طبی ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ ابو خطاب کے خاندان کے آٹھ بچے اور دو خواتین اس وقت مارے گئے جب اسرائیلی فضائی حملوں کے نتیجے میں شیٹی پناہ گزین کیمپ میں ایک تین منزلہ عمارت زمین بوس ہوگئی۔

یہ بھی پڑھیں:  بھارتی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بینر جی پر قاتلانہ حملہ

فلسطینی وزارت مذہبی امور نے کہا کہ اسرائیلی جہازوں کی بمباری سے مسجد تباہ ہوگئی، ملٹری ترجمان کا کہنا تھا کہ آرمی رپورٹ کا جائزہ لے رہی ہے۔

فلسطین کے طبی حکام کا کہنا تھا کہ غزہ میں پیر سے اب تک 32 بچوں اور 21 خواتین سمیت 132 افراد جاں بحق اور 950 زخمی ہو چکے ہیں۔

اسرائیلی حکام نے کہا کہ راکٹ حملوں سے ہلاک ہونے والے 8 افراد میں 2 بچوں سمیت 6 شہری بھی شامل ہیں۔