pak_vs_zim_second tesat2

زمبابوے کو فالو آن کا خطرہ

EjazNews

اوپنر عابد علی کی نا قابل شکست ڈبل سنچری اور نعمان علی کی97رنز کی اننگز کی بدولت پاکستان نے زمبابوے کے خلاف پہلی اننگز میں پہاڑ جیسا اسکور بنادیا اور بولروں کی شاندار کارکردگی کے باعث پاکستان ٹیم دوسرے ٹیسٹ میں مضبوط پوزیشن میں آگئی ہے،جبکہ دوسرے دن کے اختتام پر زمبابوے نے 52 رنز پر 4 وکٹیں گنوا دیں۔ عابد علی نے نعمان کی مدد سے کیریئر کی پہلی ڈبل سنچری مکمل کی اور آٹھویں وکٹ کے لیے 169 رنز کی شاندار شراکت بھی قائم کی۔نعمان علی صرف تین رنز کی کمی سے کیریئر کی پہلی سنچری نہ بنا سکے اور چائے کے وقفے کے فوراً بعد 97 رنز بنانے کے بعد چلتے بنے، ان کی 104 گیندوں پر مشتمل اس اننگز میں 5 چھکے اور 9 چوکے شامل تھے۔

پاکستان نے نعمان کے آؤٹ ہوتے ہی پہلی اننگز ڈکلیئر کرنے کا اعلان کردیا، عابد نے 29 چوکوں کی مدد سے 215 رنز کی اننگز کھیلی اور آؤٹ نہیں ہوئے۔زمبابوے کی جانب سے بلیسنگ مزربانی 3 وکٹیں لے کر سب سے کامیاب بولر رہے جبکہ ٹنڈائی چسورو نے دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔میزبان ٹیم نےہفتے کو کھیل ختم ہونے پر پہلی اننگز میں چار وکٹ پر54رنز بنائے تھے اور اسے فالو آن کے خطرے کا سامنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  ہمیں نئے کوچ کی نہیں کھلی سوچ کی ضرورت ہے

پاکستان نے پہلی اننگزچائے کے وقفے کے بعد 8وکٹ پر510رنز بناکر ڈکلیئرکردی تھی۔زمبابوے کو فالو آن سےبچنے کے لئے مزید259رنز کی ضرورت ہے جبکہ پاکستان کا اسکور برابر کرنے کے لئے اسے458رنز کی ضرورت ہے۔36سال کی عمر میں پہلا ٹیسٹ کھیلنے والے تابش خان نے پہلے ہی اوور میںماسا کاڈانا کو ایل بی ڈبلیو آوٹ کردیا۔

حسن علی نے تراسائی کو بولڈ کردیا۔ برینڈن ٹیلر شاہین شاہ آفریدی کی گیند پر کاٹ بی ہائینڈ ہوئے۔سپنر ساجد خان کو دوسرے ٹیسٹ میں پہلی وکٹ مل گئی انہوں نےملٹن شومبا کو ایل بی ڈبلیو کردیا۔کھیل ختم ہونے پرچاکا باوا28رنز پر کھیل رہے تھے۔

قبل ازیںپاکستان نے میچ کے دوسرے دن 268 رنز چار کھلاڑی آؤٹ سے اپنی پہلی نامکمل اننگز دوبارہ شروع کی تو عابد علی سنچری بنا کر ناقابل شکست تھے جبکہ ساجد خان ان کا ساتھ نبھا رہے تھے۔دونوں کھلاڑیوں نے سنبھل کر بیٹنگ کرتے ہوئے پاکستان کی ٹرپل سنچری مکمل کرائی جس کے بعد ساجد خان کی 20 رنز کی اننگز اختتام کو پہنچی۔

یہ بھی پڑھیں:  پاکستان نے7سکور سے ویسٹ انڈیز کو ہرا دیا

محمد رضوان کمزور حریف کے خلاف ایک مرتبہ پھر بڑی اننگز کھیلنے میں ناکام رہے اور 21 رنز بنا کر چلتے بنے جبکہ حسن علی کو کھاتا کھولنے کا بھی موقع نہ ملا۔341رنز پر 7 وکٹیں گرنے کے بعد عابد کا ساتھ دینے نعمان علی آئے اور دونوں کھلاڑیوں نے ذمے دارانہ بیٹنگ کرتے ہوئے اسکور کو آگے بڑھانا شروع کیا۔عابد علی نے 393 گیندوں پر ڈبل سنچری سکور کی وہ 215 رنز پر ناٹ آؤٹ رہے جب کہ نعمان علی نے اپنی پہلی نصف سنچری بنائی اور بدقسمتی سے صرف 3 رنز کی کمی سے سنچری نہ بناسکے وہ 97 رنز پر آؤٹ ہوئے۔