Sirinagar

محمد اشرف صحرائی ، بھارتی جیل میں انتقال کر گئے

EjazNews

آل پارٹیز حریت کانفرنس کے سینئر رہنما اور تحریک حریت جموں و کشمیر کے چیئرمین محمد اشرف صحرائی قابض بھارتی فوج کی قید میں انتقال کر گئے، میڈیا رپورٹ کے مطابق اشرف صحرائی جموں ہسپتال میں انتقال کر گئے ،قابض بھارتی فورسز نے 80 سالہ بزرگ حریت رہنما ءکو 2019 میں پبلک سکیورٹی ایکٹ کے تحت گرفتار کر کے جموں کے کوٹ بلوال جیل میں قید کر دیا گیا تھا،

حریت رہنما غلام مصطفیٰ صفی کے مطابق اشرف صحرائی 5 اگست 2019 کے بعد سے جیل میں تھے، اشرف صحرائی کے اہلخانہ کو ان سے ملنے کی اجازت نہیں تھی، سانس کی زیادہ تکلیف کے باعث انہیں جموں کے ہسپتال داخل کروایا گیا تھا تاہم وہ جانبر نہ ہو سکے، دوسری جانب اشرف صحرائی کے اہلخانہ کا کہنا ہے کہ انہیں چیئرمین تحریک حریت کی سری نگر میں تدفین کی اجازت نہیں دی جا رہی، امکان ہے کہ اشرف صحرائی کو کپواڑہ میں انکے آبائی علاقے میں سپرد خاک کیا جائیگا۔دریں اثناء اشرف صحرائی کی وفات پر دفتر خارجہ نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارتی جیلوں میں کشمیری سیاسی اسیروں کو طبی سہولیات کی عدم فراہمی افسوسناک ہے ،

یہ بھی پڑھیں:  سپیس فلائٹ میں 328دن گزارنے والی دنیا کی پہلی خاتون کرسٹینا

دفتر خارجہ کا ایک بیان میں کہنا تھا کہ کشمیری اپنے جائز حق کیلئے جو جد جہد کر رہے ہیں ،اسکی حمایت کرتے ہیں ، جیلوں میں مقید کشمیری سیاسی قیدیوں کو علاج معالجے کی سہولیات دی جائیں ، بیان میں کورونا کے حوالے بھارتی جیلوں کی صورتحال پر بھی تشویش کا اظہار کیا گیا۔ادھرامیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کشمیری حریت لیڈرمحمد اشرف صحرائی کی شہادت پر گہرے دکھ اور افسوس کااظہار کیا ہے۔سراج الحق نے اشرف صحرائی کی شہادت کو بڑاسانحہ قرار دیا ۔ جماعت اسلامی کے قائدین امیرالعظیم ، لیاقت بلوچ ، پروفیسر ابراہیم ،فرید احمد پراچہ ،مولاناعبدالمالک ، راشدنسیم ، اسداللہ بھٹو،اظہراقبال حسن ، محمد اصغر، وقاص انجم جعفری ، قیصر شریف اور دیگر نے بھی اشرف صحرائی کی وفات پر اظہار افسوس کیااور مرحوم کی مغفرت کیلئے دعاکی۔