Pmln_PPP

این اے 249 میں دوبارہ گنتی ، پی پی اور ن لیگ کیا کہتی ہے؟

EjazNews

الیکشن کمیشن نے NA-249 کے نتیجے کا سرکاری اعلان روک دیا ۔ دوبارہ گنتی کی درخواست پر سماعت منگل کو ہو گی،مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور این اے 249 سے نامزد امیدوار مفتاح اسماعیل نے حلقے میں ہونے والے انتخابات پر اعتراض کرتے ہوئے ووٹوں کی دوبارہ گنتی کی درخواست دی، اور الیکشن کمیشن نے درخواست منظور کر لی ہے۔ دوبارہ گنتی کی درخواست پر سماعت 4 مئی منگل کو ہو گی۔مفتاح اسماعیل نے کہا ہے کہ 249 میں دوبارہ گنتی سے کافی چیزیں واضح ہوجائیں گی، فارم 45 اور 47 کے نتائج میں فرق ہے

الیکشن کمیشن نےتمام امیدواروں کونوٹس جاری کردیئے۔ الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ این اے 249 میں دوبارہ گنتی کی درخواست پر فیصلہ ہونے کے بعد حلقے کے نتائج جاری کیے جائیں گے۔ن لیگ کےامیدوارمفتوح اسماعیل کی چیف الیکشن کمشنر کودرخواست میں کہا کہ 30 سے زائد پولنگ اسٹیشن کے نتائج موصول نہیں ہوئے، فارم 45 اور فارم 47 کے نتائج میں بھی فرق ہے اور کچھ پریزائیڈنگ افسران پر تحفظات ہیں، آر او نے ہماری تمام درخواستیں مسترد کردی ہیں، یہ رویہ آر او کا متعصب ہونا واضح کرتا ہے۔

علاوہ ازیں مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے ایک بیان میں کہا کہ دوبارہ گنتی ہمارا آئینی حق ہے، ہمیں امید ہے کہ چیف الیکشن کمشنر آئین اور شفافیت کے تقاضوں کو یقینی بنائیں گے۔ مزید برآں مسلم لیگ (ن) کی مرکزی نائب صدر مریم نواز شریف نے کہا ہے کہ اگراین اے249کی جیت شفاف ہے تو کسی جماعت کو دوبارہ گنتی کرانے میں پریشانی نہیں ہونی چاہیے ۔سوشل میڈیا پر اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ جیت کا مارجن چند سو ووٹ کا ہے جبکہ مسترد شدہ ووٹ جیت کے فرق سے زیادہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پانچ فیصد سے کم فرق پر دوبارہ گنتی ہمارا قانونی و آئینی حق ہے ۔

یہ بھی پڑھیں:  گلگت بلتستان کے تمام ترقیاتی کام پیپلز پارٹی کے دور میں ہی ہوئے:چیئرمین پیپلز پارٹی

مزید برآں مسلم لیگ (ن)کے رہنما و سابق وزیرِ اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہاین اے 249 میں جو چوتھے نمبر پر بھی نہیں تھے وہ کیسے جیت گئے؟ بلاول صاحب کا مقام نہیں کہ وہ اس پر بات کریں، بلاول بھٹو کو چاہیے کہ وہ اپنے قد کے مطابق بات کریں۔ کراچی کا انتخاب ڈسکہ سے بھی زیادہ متنازع بن چکا ہے ۔34پولنگ اسٹیشنز کے رزلٹ ریٹرننگ افسر کے پاس نہیں آئے ،100 سے زائد فارم 45 پر پر یزائیڈنگ افسروں کے دستخط نہیں700ووٹ مسترد ہوئے،ریٹرننگ افسر سجاد خٹک نے فیصلہ لکھ کر رکھا ہوا تھا اور جس کے بعد ہماری پٹیشن مسترد کر دی۔ ہمیں معلوم ہوگیا ہے کہ پیپلز پارٹی کے عزائم کیا ہیں۔ قانون میں دوبارہ گنتی کا عمل موجود ہے۔

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نےکہا ہے کہ دوبارہ گنتی کے بجائے ری پولنگ ہونی چاہیے، اصلاحات کیلئے تیار نہیں توروئیں بھی نہیں، الیکشن کمیشن نےحکم امتناع دےکراچھاکیا، این اے 249 میں ٹرن آؤٹ بہت کم رہا۔انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کی جیت پر سب پارٹیوں نے تنقید کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  وزیراعظم عمران خان نے حادثے کی فوری تحقیقات کے احکامات جاری کر دئیے

پیپلز پارٹی کے رہنما اور صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی نے کہا ہے کہ کراچی کے این اے 249 کے ضمنی الیکشن میں دھاندلی نہیں ہوئی، ری پولنگ میں مفتاح اسماعیل بری طرح ہاریں گے۔انہوں نے ضمنی انتخاب میں نون لیگ کی شکست کی وجہ بتاتے ہوئے کہا کہ نون لیگ والے اپنی بدنظمی کی وجہ سے ہارے ہیں۔سعید غنی نے کہا کہ ن لیگ والوں کو درخواست دینے کا حق ہے، پارٹی کو تجویز دی ہے کہ پورے حلقے میں ری پولنگ کرائیں۔انہوں نے کہا کہ یقین ہے ری پولنگ میں ان کو دوبارہ شکست ہوگی، مفتاح اسماعیل بری طرح ہاریں گے۔
پیپلز پارٹی وسطی پنجاب کے صدر قمر زمان کائرہ ،چودھری منظور احمد نے صوبائی سیکرٹریٹ ماڈل ٹائون ماڈل ٹائون میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ کارٹل توڑنے کا دعویٰ کرنے والے خود کارٹلز کی سرپرستی کر رہے ہیں۔ کامیابی کو دھاندلی میں بدلنے کی کوشش کی جا رہی ہےن لیگ کہنے کو حکومت مخالف ہے مگر اسے گرانے میں اعتراض بھی کر رہی ہے،این اے 249میں اگر کسی کے پاس دھاندلی کے ثبوت ہیں تو الیکشن کمیشن سے دوبارہ گنتی کے لیے رجوع کرے۔اگر کسی کو گمان تھا کہ وہ جیتیں گے تو اسکا کوئی علاج نہیں۔مریم ،شاہد خاقان عباسی اور رانا تنویر کے بیانات گواہ ہیں لگتا ہے ن لیگ وزیر اعظم کے نکتہ نظر سے متفق ہوچکی ہے۔پنجاب سے شروع کرتے تو اب تک پی ٹی آئی حکومت کا خاتمہ ہو چکا ہوتا۔ن لیگ والے اپنی اداؤں پہ ذرا غور کریں،اونچی آواز میں بول کر خفت مٹا رہے ہیں۔مولانا سے پوچھیں کہ ن لیگ موجودہ حکومت کا خاتمہ کیوں نہیں چاہتی۔پی ڈی ایم نہیں چھوڑی،اتحادوں میں مر ضی کے فیصلے نہیں ہوتے۔

یہ بھی پڑھیں:  کورنا متاثرین کی تعداد پنجاب میں کم اور سندھ میں زیادہ ہو گئی